abducted

لاہور میں پولیس اہلکار نے شہری کی بیوی کو اغوا کر لیا

لاہور (سحر نیوز) لاہور میں پولیس اہلکار نے شہری کی بیوی کو اغوا ( abducted) کر لیا۔تفصیلات کے مطابق جب بھی پنجاب پولیس کا ذکر آتا ہے تو ہمارے ذہن میں پنجابپولیس کا ایک انتہائی منفی سا خاکہ ابھرتا ہے۔جس میں رشوت ستانی ، اختیارات سے تجاوز اور شہریوں سے بدتمیزی نمایاں نظر آتی ہے۔ اس وجہ سے پنجاب پولیس کے حوالے سے عوام میں انتہائی منفی تاثرات پائے جاتے ہیں اور عوام پولیس کو اپنا محافظ سمجھنے کی بجائے اس سے کترانے لگتی ہے تاہم اب پنجاب پولیس خواتین کی عزت بھی لوٹنے لگ گئی ہے۔
میڈیا رپورٹس کے مطابق لاہور میں ایک افسوسناک واقعہ پیش آیا ہے جہاں پولیس اہلکار نے شہری کی بیوی کو اغوا کر لیا اور اسے کئی روز تک اپنی ہوس کا نشانہ بناتا رہا۔

رپورٹس میں مزید بتایا گیا ہے لاہور پولیس کے اے ایس آئی نے شہری کی بیوی کو اغوا ( abducted) کرلیا۔لاہور پولیس اے ایس آئی کو رنگے ہاتھوں پکڑنے کے باوجود بچانے میں لگ گئی۔جس واقعہ لاہور کے علاقے بادامی باغ میں پیش آیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں.پاکستان کرکٹ بورڈ نے ورلڈکپ میں قیادت کی بحث پر فیصلہ سنا دیا

پولیس نے خاتون کو بازیاب کروا ل؛یا تاہم ابھی بھی پولیس پیٹی بھائی کو بچانے کے چکروں میں ہے۔پولیس نے زیادتی کا شکار ہونے والی خاتون کا تاحال میڈیکل چیک اپ بھی نہ کروایا اور نہ ہی پولیس اہلکار ذوالفقار کے خلاف مقدمہ کاٹا ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق جب کہ متاثرہ خاتون کا شوہر مقدمہ درج کرنے گیا تو اسے دھمکیاں بھی دی گئیں۔خاتون کے شوہر کے مطابق اسی کی بیوی کو کئی روز پہلے اغوا کیا گیا اور اس کے ساتھ زیادتی کی۔
یاد رہے کہ معصوم لڑکیوں اور خواتین کے ساتھ زیادتی ( abducted) کے واقعات آئے روز پیش آتے رہتے ہیں تاہم قانون نافذ کرنے والے ادارے ان واقعات میں کمی اور روک تھام کے لیے کچھ بھی نہیں کر پا رہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق زیادتی کیس میں ملوث مجرموں میں سے اکثر ایسے مجرم ہوتے ہیں جنھیں مضبوط پشت پناہی حاصل ہوتی ہے جس کی وجہ سے ان کے خلاف کاروائی نہیں ہوتی اور وہ قانون کی گرفت سے آزاد ہوتے ہیں۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں