نیب سکھر اور راولپنڈی نے مشترکہ طور پر کارروائی،خورشید شاہ(khurshid shah) کو گرفتار کر لیا

khurshid shah

نیب ذرائع کے مطابق خورشید شاہ(khurshid shah) کو آمدن سے زیادہ اثاثوں کے الزام میں گرفتار کیا گیا، انہیں نیب سکھر
کے کیس میں نیب راولپنڈی کی ٹیم نے بنی گالہ سے حراست میں لیا۔

نیب ذرائع نے بتایا کہ خورشید شاہ(khurshid shah) کے خلاف 7 اگست سے تحقیقات کا آغاز ہوا تھا، ان پر کوآپریٹو
سوسائٹی میں بنگلے کیلئے ایمنٹی پلاٹ غیر قانونی طور پر اپنے نام کرانے کا الزام ہے۔

نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ خورشید شاہ نے ہوٹل، پٹرول پمپس اور بنگلے فرنٹ مین اور بے نامی داروں
کے ناموں پر بنائے۔ انہوں نے کوآپریٹو سوسائٹی میں بنگلے کیلئے پلاٹ غیر قانونی طور پر نام
کرائے۔ انھیں ریمانڈ کیلئے کل عدالت میں پیش کیا جائے گا اور راہداری ریمانڈ لے کر خورشید شاہ
کو سکھر منتقل کیا جائے گا۔

بتایا گیا ہے کہ خورشید شاہ کے خلاف 7 اگست سے تحقیقات کا آغاز کیا گیا تھا۔بتایا گیا ہے
کہ ابتدائی تحقیات میں ان پر لگے الزام صحیح ثابت ہوئے، اب مزید تفتیش بھی کی جائے گی۔
خورشید شاہ کو آج نیب کورٹ میں طلب بھی کیا گیا تھا تاہم وہ پیش نہ ہوئے جس کے بعد
ان کی گرفتاری عمل میں لائی گئی۔

پولیس نے لا پتہ ہونے والی 13سالہ لڑکی سوات(swat) سے ڈھونڈ نکالی

خورشید شاہ(khurshid shah) کو متعدد بار نیب نے طلب کیا۔خورشید شاہ کا راہداری ریمانڈ حاصل کر کےنیب
سکھر منتقل کیا جائے گا۔خورشید شاہ پر کوآپریٹو سوسائٹی میں بنگلے کے لیے ایمنٹی پلاٹ
غیر قانونی طور پر اپنے نام کرانے کا الزام ہے۔خورشید شاہ کی جائیدادوں،فرنٹ مین کی
تفصیلات بھی سامنے آئی ہیں۔خورشد شاہ نے ہوٹل، پٹرول پمپس، بنگلے فرنٹ مین اور
بے نامی اداروں کےناموں پر بنائے۔

خورشید شاہ نے لڈو مل کے نام پر 11 جائیدایں بنا رکھی ہیں۔خورشید شاہ نے آفتاب حسین
سومرو کے نام پر 10جائیدایں بنائیں۔ خورشید شاہ نے اعجاز کے نام سے سکھر اور
روہڑی میں دو دو جائیدایں بنائیں۔خورشید شاہ کی بے نامی جائیداوں میں عمر جان کا
اہم کردار رہا۔واضح رہے خورشد شاہ کو ریمانڈ کے لیے کل احتساب عدالت پیش کیا
جائے گا۔جب کہ دوسری جانب خورشید کی گرفتاری کے بعد پیپلز پارٹی اور
مسلم لیگ ن نے کشمیر کانفرنس کا بائیکاٹ کر دیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں