وزیراعظم عمران خان(prime minister of pakistan imran khan) دو روزہ سرکاری دورے پر آج سعودی عرب روانہ

prime minister of pakistan imran khan

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب کے دورے کے موقع پر وزیراعظم(prime minister of pakistan imran khan) سعودی قیادت سے
مقبوضہ کشمیر کی تشویشناک صورت حال پر گفتگو کریں گے۔

وزیراعظم (prime minister of pakistan imran khan)بھارت کی جانب سے 5 اگست کے غیرآئینی اقدامات پر تبادلہ خیال کریں گے،
وزیراعظم مسئلہ کشمیر پر سعودی ولی عہدمحمد بن سلمان سے مسلسل رابطے میں ہیں۔

محمد بن سلمان کے دورہ پاکستان کے بعد دو طرفہ تعلقات مضبوط ہوئے ہیں۔
وزیراعظم عمران خان ریاض حکومت کو بھارتی جارحیت سے آگاہ کریں گے۔

وزیراعظم آفس کا کہنا ہے کہ سعودی عرب اور پاکستان کے درمیان اقتصادی
شراکت داری کو مزید مستحکم کرنے پر تبادلہ خیال ہوگا، دونوں ممالک کے تعلقات
میں گرم جوشی اور باہمی اعتماد کی فضا ہے۔

’وزیر اعظم کے دورہ سے دونوں ممالک کے برادرانہ تعلقات کو مزید تقویت ملے گی،
مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعاون کو مزید وسعت دیں گے-

سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ اور
مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد بھی عمران خان کے ہمراہ ہوں گے۔

وزیر اعظم کا نوٹس،ڈی پی او قصور(kasur)، ایس ایچ او اور ڈی ایس پی کو عہدے سے ہٹا دیا گیا

خیال رہے کہ عمران خان نے رواں ماہ میں اب تک دو بار سعودی ولی
عہد محمد بن سلمان سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا ہے۔

گزشتہ روز وزیراعظم نے سعودی آئل کی تنصیبات پرحملے کی مذمت کی کرتے ہوئے
کہا تھا کہ پاکستان مشکل وقت میں اپنے مسلم ملک بھائی کے ساتھ کھڑا ہے۔

ٹیلی فون پر بات کرتے ہوئے پاکستان کے وزیراعظم نے کہا کہ سعودی عرب کے
امن اورعالمی معیشت کونشانہ بنانے کی ہرکوشش سے مقابلہ کیا جائے گا۔

قبل ازیں عمران خان نے 3 ستمبر کو بھی محمدبن سلمان سے ٹیلی فون پر بات کی
اور کشمیر کی سنگین صورتحال سے آگاہ کیا۔

یاد رہے کہ وزیر اعظم عمران خان کا یہ تیسرا دورہ سعودی عرب ہے۔ وہ اس سے
قبل وزارت عظمیٰ کا عہدہ سنبھالنے کے بعد 2 بار سعودی عرب کا دورہ کرچکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں