عوام مجھ کو انضمام الحق کے بھتیجے کے بجائے ایک قومی کرکٹر سمجھی:امام الحق(Imam-ul-Haq)

Imam-ul-Haq

اوپنرامام الحق(Imam-ul-Haq) کا کہنا ہے کہ عوام مجھ کو انضمام الحق کے بھتیجے کے بجائے ایک قومی کرکٹر سمجھیں، تنقید پر دباؤ ہمیشہ ہوتا ہے،
2 اننگز میں کارکردگی نہ دکھا پاؤں تو ڈر ہوتا ہے کہ شائقین کبھی معاف نہیں کریں گے.

برطانوی میگزین کو انٹرویو میں انھوں نے مزید کہا کہ میں نے خود کو بدلنے کی کوشش کی لیکن جذباتی ہوں، ٹیم ہارے
تو رو جاتا ہوں۔ ساتھی کھلاڑیوں شاداب خان فخرزمان یا کسی اور کو نشانہ بنایا جائے تو بھی پریشان ہوجاتا ہوں،میری
پوری کوشش ہوتی ہے کہ میدان میں اپنی توجہ کھیل پر مرکوز رکھتے ہوئے ملک کیلیے بہترسے بہتر کارکردگی
دکھاؤں، بہرحال یہ کرکٹ ہے،میدان جنگ نہیں،کھیل میں اتار چڑھاؤ آسکتے ہیں۔

پاکستان اور سری لنکا(pakistan vs sri lanka) کے درمیان دوسرے ایک روز میچ کے شیڈول میں نظر ثانی

ان کا کہنا تھا کہ انضما م الحق کا بھتیجا ہونے کی بہت سزا دی گئی اور کہا جانے لگا کہ وہ میری سلیکشن
کے لئے مداخلت کرتے ہیں،میں چاہوں گا کہ لوگ مجھے انضمام الحق کا بھتیجا ہونے کی بجائے
امام الحق(Imam-ul-Haq) ہونے کی حیثیت سے یاد رکھیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں