تمام کھلاڑیوں کے بھی اقوام متحدہ میں وزیراعظم کی تقریر پر ٹویٹ(twitter)

twitter

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر(twitter) پر سابق کپتان اور عمران خان کی قیادت میں کرکٹ ورلڈکپ 1992ءکی
چیمپئن ٹیم کا اہم حصہ رہنے والے وسیم اکرم نے کہا کہ” مجھے ایسا محسوس ہورہا ہے کہ ہماری صحیح
آواز کے ساتھ نمائندگی ہورہی ہے، اب دنیا دیکھ سکتی ہے کہ ہم کیا ہیں اور کس کے لیے کھڑے ہیں“۔

ورلڈ کپ1992ءکی چیمپئن ٹیم کے ایک اور رکن رمیز راجا نے ٹوئٹر(twitter) پر اپنے پیغام میں کہا کہ” اقوام متحدہ
کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں وزیراعظم عمران خان کے خطاب کو سننے کے لیے میں اپنی کرسی پر
بیٹھا ہوں، پاکستان کی اس سے اچھی نمائندگی نہیں ہوسکتی تھی، عمران خان نے اپنا کردار اعزاز کے
ساتھ ادا کیا، وہ ایک ٹائیگر ہیں“۔

سابق کپتان شاہد آفریدی نے اپنے پیغام نے کہا کہ ”انہیں وزیراعظم عمران خان کی اقوام متحدہ میں تقریر
کی شدت سے انتظار تھا، ہمارے توسط سے دل و جان اور عزت و وقار کے ساتھ بات کرنے اور فرنٹ
سے لیڈ کرنے پر ہمیں وزیراعظم پر فخر ہے، سچ بولنا اور اس سچ کو انسانیت کے حوالے سے مظالم
پر غالب آتے دیکھنا خوش آئند ہے“۔

عوام مجھ کو انضمام الحق کے بھتیجے کے بجائے ایک قومی کرکٹر سمجھی:امام الحق(Imam-ul-Haq)

قومی ٹیم کے ایک اور سابق کپتان شعیب ملک نے ٹوئٹر(twitter) پر اپنے پیغام میں کہا کہ ”اقوام متحدہ میں
وزیراعظم عمران خان کی تقریر 1992ءکے ورلڈکپ کی کامیابی کی طرح ہمیشہ یاد رہے گی“۔

آل راﺅنڈر محمد حفیظ بھی اقوام متحدہ میں وزیراعظم عمران خان کی تقریر کے معترف ہوگئے ۔

فاسٹ باﺅلر وہاب ریاض نے اپنے ٹوئٹ میں وزیراعظم عمران خان کے جملے کو نقل کرتے ہوئے
کہا کہ ”دنیا سوا ارب کی مارکیٹ کو خوش کرےگی یا انسانیت کی جانب دیکھے گی“۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنے پیغام میں حسن علی کا کہنا تھا کہ انہیں خوشی ہے کہ
پاکستان کو عمران خان جیسے عظیم لیڈر ملے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں