حکومتی وزراء نے مولانا فضل الرحمن(Maulana Fazl Ur Rehman) کے ساتھ معاملات طے ہونے کا دعویٰ کر دیا

Maulana Fazl Ur Rehman

صوبائی وزیر میاں اسلم اقبال نے جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ ف مولانا فضل الرحمن(Maulana Fazl Ur Rehman)
کے ساتھ معاملات طے ہونے کا عندیہ دے دیا۔ وزیر اطلاعات پنجاب
میاں اسلم اقبال نے کہا ہے کہ 2015 میں الیکشن ہوئے لیکن مئیرز کو
اختیارات ہی نہیں دئیے گئے۔ہم چاہتے ہیں کہ آرٹیکل 140 اے کے
تحت نچلی سطح پر پاور دی جائے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ مولانا کے دھرنے کے حوالے سے قوم کو
اچھی خبر ملے گی۔ مولانا کے دھرنے کے حوالے سے معاملات
ٹھیک ہونے جا رہے ہیں۔جب کہ وفاقی وزیر شیخ رشید نے بھی کہا
ہے کہ مولانا فضل الرحمن(Maulana Fazl Ur Rehman) کا دھرنا ختم ہو رہا ہے ،ایک دو روز
میں مسائل حل ہو جائیں گے اور مولانا فضل الرحمن واپس چلے جائیں
گے۔انہوں نے کہا کہ موجود حکومت نے انتہائی دانشمندی سے اس
معاملے کو ہینڈل کیا۔

عمران خان(imran khan) نے حکومتی مذاکراتی کمیٹی کو کھلی چھٹی دیدی

شیخ رشید نے کہا کہ مولانا فضل الرحمن(Maulana Fazl Ur Rehman) جا رہے ہیں اور حکومت
اپنے پانچ سال پورے کرے گی.جب کہ پاکستان تحریک انصاف کے
سینئر مرکزی رہنما و سابق وفاقی وزیر ہمایوں اختر خان نے کہا ہے
کہ مولانا فضل الرحمان نے پیپلز پارٹی اور (ن) لیگ کی کمزوریوںسے
بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے کمال مہارت سے انہیں پیچھے دھکیل کر خود
اپوزیشن کی حیثیت پر قبضہ جما لیا ،(ن) لیگ او رپیپلز پارٹی والے
آزادی مارچ کو’’لیڈر بچائو ‘‘مارچ سمجھتے رہے جبکہ جے یو آئی
(ف) نے اصل میں ’’ پارٹی چڑھائو ‘‘ مارچ کیا ،کسی کو بھی ریاست
کی رٹ کو چیلنج کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔
جب کہ وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈا نے کہا ہے کہ

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) حکومت کو جمیعت علمائے اسلام( جے یو آئی) ف
کے سربراہ مولانا فضل الرحمان(Maulana Fazl Ur Rehman) کے آزادی مارچ سے کوئی پریشانی نہیں ہے،
موجودہ حکومت کو مزید مضبوط کرنے پر ہم مولانا کے شکر گزار ہیں۔
وزیر اعظم کے استعفیٰ اور نئے انتخابات کے بارے سوال کے جواب میں
وفاقی وزیر نے کہا کہ جے یو آئی ف کے سربراہ کے تمام مطالبے
مکمل طور پر غیرآئینی ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہ جے یو آئی ف کے سربراہ کے ناجائز مطالبات کو
کبھی تسلیم نہیں کیا جائے گا اور نہ ہی ان کا اقتدار پر قبضہ کرنے کا
خواب پورا ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ عوام نے پی ٹی آئی حکومت کو ریاست
کے امور چلانے کا مینڈیٹ دیا ہے اور حکومت اپنی آئینی مدت پوری کرے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں