ورلڈ وائڈ ویب نے ’’کنٹریکٹ فار دی ویب(Contract for the Web)‘‘ لانچ کر دیا

Contract for the Web

ورلڈ وائڈ ویب کے بانی ٹم برنرز لی نے پیر کو ’’کنٹریکٹ فار دی ویب(Contract for the Web)‘‘ لانچ کر
دیا ہے جس کا مقصد حکومتوں ، کمپنیوں اور افراد کے انٹرنیٹ ویب پورٹل
کے “غلط استعمال” کو روکنا ہے۔ ٹم برنرز لی نے ’’کنٹریکٹ فار دی ویب(Contract for the Web)‘‘
کو برلن میں ہونے والے چار روزہ یو این انٹرنیٹ گورنس فورم میں لانچ کیا
جس کو گوگل، مائیکروسافٹ ،فیس بک،ریڈیٹ، رپورٹرز ود آئوٹ بارڈرز اور
الیکٹرانکس فرنٹیئرز فائونڈیشن سے150 سے زائد عالمی تنظیموں اور فرانس
،جرمنی اور گھانا کی مکمل حمایت حاصل ہو چکی ہے۔
ناس موقع پر برنرز لی نے ورلڈ وائلڈ ویب فائونڈیشن سے اپنے خطاب میں
کہا کہ اگر ہم نے ویب کے غلط استعمال ، تقسیم اور حالات میں بگاڑپیدا کرنے
کے خلاف اس وقت کوئی قدم نہ اٹھایا اور مل کر کام نہ کیا تو ہمیں بھٹکنے
سے کوئی نہیں روک سکتا۔
برنرز لی نے بتایا کہ انہوں نے ’’کنٹریکٹ فار دی ویب‘‘کو درجنوں ماہرین
اور عوامی نمائندوں کے تعاون سے ترتیب دیا ہے جو حکومتوں اور کمپنیوں
کو انسانی حقوق اور جمہوری قدروں کو بلائے طاق رکھتے ہوئے اپنے مفاد
میں استعمال کرنے سے روکنے اور انٹرنیٹ قوائد و ضوابط کے استحکام
کو یقینی بنانے میں مدد دے گا۔

معافی مانگی اور پھر اس کا تاج چرا کر فرار،حیدرآباد دکن(Hyderabad Deccan)

انھوں نے کہا کہ ’’کنٹریکٹ فار دی ویب(Contract for the Web)‘‘ ایک بہتر ویب کی جانب نشان راہ
ہے جو شہریوں کے ڈیجیٹل حقوق کو پامال کرنے والوں کو احتساب کے دائرے
میں لائے گا اور ایک صحت مندانہ آن لائن بات چیت کو فروغ دے گا۔برنرز لی
نے یورپین فزکس لیبارٹری ’سرن‘میں کام کے دوران ویب کو 1989میں تشکیل
دیا تھا تاکہ دنیا بھر کے سائنسدان اپنی اپنی تحقیق کا ایکدوسرے سے تبادلہ کر
سکیں لیکن گزرتے وقت کے ساتھ ویب کا سائبر بلنگ ، نیوز میڈیا کی گمراہی
اور آن لائن سکیمز کے لئے استعمال بڑھتا چلا گیا۔یاد رہے کہ دنیا کی اس
وقت 46 آبادی کو آن لائن سہولت میسر نہیں ہے،برنرز لی نے گزشتہ سال
’’سالڈ‘‘کے نام سے ایک پلیٹ فارم بھی لانچ کیا تھا جس کا مقصد یوزرز
کو اپنے ڈیٹا پر کنٹرول دینا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں