petroleum products

یکم دسمبر سے پٹرولیم مصنوعات (petroleum products) کی قیمتوں میں کمی کا امکان

اسلام آباد (سحر نیوز) : پاکستان میں یکم دسمبر سے پٹرولیم مصنوعات (petroleum products) کی قیمتوں میں کمی کا امکان ہے۔ تفصیلات کے مطابق عالمی منڈی میں خام تیل (petroleum products) مزید سستا ہونے سے پاکستان میں بھی قیمتیں کم ہونے کی اُمید جاگ گئی ہے۔ پاکستان میں پیٹرول اور ڈیزل کم سے کم دس روپے فی لیٹر تک سستا کیا جاسکتا ہے۔ عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت 86 ڈالر سے 62 ڈالر53 سینٹ فی بیرل ہوگئی ہیں۔
عالمی منڈی میں خام تیل (petroleum products) کی یہ قیمت 9 ماہ کی کم ترین سطح پر ہے۔ 4 اکتوبر سے اب تک خام تیل (petroleum products) کی قیمت میں 24 ڈالر فی بیرل کمی ہوئی۔ 4 چار اکتوبر کو خام تیل کی عالمی قیمت 86 ڈالر فی بیرل تھی۔ واضح رہے کہ گذشتہ ڈیڑھ ماہ سے خام تیل کی قیمت میں مسلسل کمی ہو رہی ہے۔ عالمی قیمت میں کمی کے تناسب سے پاکستان میں پیٹرول (petroleum products) اور ڈیزل (petroleum products) کم سے کم دس روپے فی لیٹر تک سستا کیا جاسکتا ہے۔

اس حوالے سے وفاقی وزیرخزانہ اسد عمر بھی عوام کو خوشخبری سنا چکے ہیں۔ اسد عمر نے کہا کہ عالمی مارکیٹ میں نومبر میں پٹرولیم مصنوعات (petroleum products) کی قیمتیں کم ہوئی ہیں، یکم دسمبر سے پٹرولیم مصنوعات (petroleum products) کی قیمتیں کم کردیں گے۔اسد عمر نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں ایک سوال کے جواب میں کہا کہ بجلی کی قیمت جتنی بڑھانی تھی بڑھ چکی ہے،لیکن اب آئی ایم ایف کے ساتھ کیا مذاکرات ہوتے ہیں اس پر مزید بجلی بڑھانے کا دیکھیں گے۔
لیکن ہمارا تو بجلی کی قیمتیں بڑھانے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔اب تک بجلی کی تنی قیمت زیادہ کی گئی ہے اس میں 70 فیصد پاکستانیوں کیلئے بجلی کی قیمت میں ایک پیسا بھی اضافہ نہیں کیا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ پٹرول پر ٹیکس کی شرح پچھلے 15 سالوں میں سب سے کم شرح ہے۔ پٹرول کی قیمتوں (petroleum products) میں عالمی مارکیٹ میں قیمتیں بڑھنے کی وجہ سے اضافہ کیا ہے۔ہمارے تین مہینوں میں پہلے مہینے میں ڈیزل ساڑھے چھ روہے سستا ہوا اور اڑھائی روپے پٹرول سستا ہوا۔
دوسرے مہینے میں اوگرا نے کہا کہ قیمتیں بڑھائیں ہم نے قیمتوں میں اضافہ نہیں کیا۔ جبکہ تیسرے مہینے میں انہوں نے جتنی قیمتیں بڑھانے کی بات کی اس سے بھی آدھی قیمتیں بڑھائی ہیں۔اسی نومبر میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں گرنا شروع ہوئی ہیں تواب ہم یکم دسمبر کو ریلیف دیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں