Ch Nisar

چوہدری نثار (Ch Nisar) نے ن لیگ سے راہیں جدا کرنے کا باقاعدہ اعلان کردیا

اسلام آباد (سحر نیوز) چوہدری نثار (Ch Nisar) نے ن لیگ سے راہیں جدا کرنے کا باقاعدہ اعلان کردیا، سابق وزیر داخلہ (Ch Nisar) کا کہنا ہے کہ اب ن لیگ کی قیادت اور شریف خاندان سے کوئی رابطہ یا تعلق باقی نہیں رہا، وزیراعظم کو مشورہ ہے کہ ڈنڈا لیکر نہیں، افہام و تفہیم سے حکومت ہوسکتی ہے۔ تفصیلات کے مطابق سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان (Ch Nisar) نے وزیر اعظم عمران خان کو مشورہ دیا ہے کہ ڈنڈا لیکر نہیں ،ْافہام وتفہیم سے حکومت ہوسکتی ہے ،ْ احتساب ضرور ہو مگر بلا تقریق ہونا چاہیے ،ْ یہ احتساب نہیں کہ اپوزیشن کو رگڑا دیدیں اور حکومت میں لوگوں کو کوئی نہ پوچھے ،ْ نیب اپوزیشن کا ایک آدمی گرفتار کرتا ہے تو پوری حکومتی ٹیم پریس کانفرنس کر کے کہتی ہے ہم نے پکڑایا ہے ،ْوزیر اعظم کہتے ہیں کسی کو نہیں چھوڑینگے ،ْ عمران خان کو بیٹنگ وکٹ ملی ہے ،ْ اتنا اچھا ماحول شاید مسلم لیگ (ق)کو ملا تھا ۔

ایک انٹرویو میں چوہدری نثار علی خان (Ch Nisar) نے ن لیگ سے راہیں جدا کرنے کا باقاعدہ اعلان کردیا۔ چوہدری نثار (Ch Nisar) نے کہا کہ اب ن لیگ کی قیادت اور شریف خاندان سے کوئی رابطہ یا تعلق باقی نہیں رہا۔ چوہدری نثار (Ch Nisar) کا مزید کہنا تھا کہ میں کہتا ہوں احتساب ضرور ہونا چاہیے مگر اس کیلئے ضروری ہے کہ یہ بلا تفریق ہونا چاہیے ۔ سابق وزیر داخلہ (Ch Nisar) نے کہا کہ یہ احتساب نہیں ہے کہ اپوزیشن کوتورگڑا دے دیں اور جو آپ کیساتھ لوگ ہیں ان کو کوئی نہ پوچھے ۔
چوہدری نثار علی خان (Ch Nisar) نے کہا کہ جس طرح نیب قانون اپوزیشن پر لاگو ہوتا ہے اسی طرح آپ کے لوگوں پر لاگو ہوتا ہے ۔ایک سوال پر انہوںنے کہا کہ بیانات سے لوگوں کو یقین نہیں آتا ہے ،ْنیب اگر کوئی آدمی اپوزیشن کی جانب سے گرفتار کرتا ہے تو حکومت کی پوری ٹیم پریس کانفرنس کرتی ہے اور کہتے ہیں کہ ہم نے پکڑایا ہے ،ْ وزیر اعظم کہتے ہیں ایک کو بھی نہیں چھوڑونگا ۔
چوہدری نثارعلی خان (Ch Nisar) نے کہاکہ اگر انکوائری سٹیج پر اپوزیشن کی طرف سے کوئی فرد گرفتار ہوتا ہے تو اسی طرح حکومت کا بھی بندہ گرفتار ہونا چاہیے ۔ایک سوال پر انہوںنے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کو صرف یہی کہوں گا کہ ان کو بیٹنگ وکٹ ملی ہے ،ْ اور وہ سپن لے رہی ہے اور نہ ہی پیس ،ْبالکل سیدھا کھیلنا ہے ،ْمگر پہلے سیدھا کھیلیں تو صحیح ۔انہوںنے کہاکہ اتنا اچھا شاید ماحول مسلم لیگ (ق)کو ملا تھا ،ْاس سے بہتر ماحول اور پچ عمران خان کوملی ہے مگر سب سے پہلے اچھی ٹیم میدان میں لیکر آئیں یہ ذہن سے بات نکال دیں کہ ڈنڈا لیکرآپ حکومت کرینگے ،ْنہیں افہام و تفہیم سے حکوومت ہو سکتی ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں