FATA

وزیراعظم نے قطر کی جانب سے اعلان کردہ 1 لاکھ نوکریوں کا زیادہ حصہ فاٹا (FATA) کے لوگوں کو دینے کا حکم دے دیا

فاٹا (FATA) (سحر نیوز) وزیراعظم پاکستان عمران خان نے دورہ شمالی وزیرستان کے دوران قبائلیوں کے لیے بڑے پیکج کا اعلان کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فاٹا (FATA) انضمام شدہ اضلاع کیلئے صوبوں کے این ایف سی کا3 فیصد دینے، ضم شدہ اضلاع میں جلد بلدیاتی اورصوبائی انتخابات کرانے اورپولیس اصلاحات کی جائیں گی، وزیراعظم نے لیویزاورخاصہ داروں کے تمام تحفظات دورکرنے، لیویزاورخاصہ داروں کی ملازمتوں کا تحفظ یقینی بنانے،انصاف کی جلد فراہمی وتنازعات کے مشاورت سے حل کیلئے ڈی آرسی سسٹم لانے، شمالی وزیرستان ڈسٹرکٹ کیلئے یونیورسٹی اورآرمی کیڈٹ کالج بنانے کا بھی اعلان کردیا ہے۔
اسی طرح وزیراعظم نے کہا کہ شمالی وجنوبی وزیرستان میں اسپتال کے ساتھ میڈیکل کالج بنایا جائے گا، ضم اضلاع کے رہائشیوں کیلئے ہیلتھ انشورنس کارڈزدینے، اسپیشلسٹ ڈاکٹرزکی کمی پوری کرنےکیلئے ٹیلی میڈیکس سسٹم بنانے سمیت قطرکی دی گئی ملازمتوں میں ضم اضلاع کا بڑاحصہ رکھا جائےگا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم پاکستان عمران خان نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے ہمراہ شمالی وزیرستان کا دورہ کیا۔

وفاقی، صوبائی وزراء سمیت گورنراور وزیراعلیٰ کے پی بھی وزیراعظم کے ہمراہ تھے۔ وزیراعظم عمران خان نے یادگار شہداء پرپھول چڑھائے۔ وزیراعظم عمران خان کوخطے میں امن کیلئے جاری آپریشنزاور متاثرین کی بحالی کے اقدامات اور اقتصادی سے متعلق بریفنگ دی گئی۔ وزیراعظم کی دہشتگردی اور مشکل حالات میں ساتھ دینے پر فاٹا (FATA) اور خیبرپختونخواہ کی عوام کی تعریف کی۔
وزیراعظم نے دہشتگردی کے خلاف کامیاب آپریشنز پر پاک فوج کی بھی تعریف کی۔ وزیراعظم کوپاک افغان سرحد پر باڑ لگانے سے متعلق بھی بریفنگ دی گئی۔ وزیراعظم عمران خان نے غلام خان بارڈرٹرمینل کا دورہ کیا اور باڑ لگانے کے عمل کا جائزہ بھی لیا۔ اس موقع پروزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کسی ملک کی مسلح افواج نے وہ کام نہیں کیا جوہماری افواج نے کیا ہے۔
فاٹا (FATA) کی عوام کے دہشتگردی کی جنگ کے دوران قربانیاں دی ہیں۔ قبائلی عوام دہشتگردی کی جنگ کے دوران مشکلات سے گزرے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اب پاکستان پرائی جنگ ملک کے اندر نہیں لڑے گا۔ مسلط کی جنگ میں پاکستان کا بہت نقصان ہوا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان نے دہشتگردی کی جنگ میں سب سے زیادہ قربانیاں دی ہیں۔ دہشتگردی کی جنگ میں کسی ملک کی فوج نے اتنا کام نہیں کیا جتنا پاکستان نے کیا ہے۔
جنگ سے پاکستان کے اقتصادی اور معاشی شعبے متاثر ہوئے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ افغانستان میں امن پاکستان کے مفاد میں ہے۔ پاکستان افغانستان میں امن کی بحالی کیلئے کردار ادا کرے گا۔ افغانستان میں دیرپاامن کیلئے افغانی سٹیک ہولڈر سے ملکرامن عمل کو آگے بڑھایا جائے گا۔پاکستان افغانستان سمیت سرحدوں سے بھی آگے امن چاہتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں