gas crisis

حکومت کا گیس بحران (gas crisis) پر قابو پانے کے لیے اہم اقدام

اسلام آباد ۔ (سحر نیوز) وزیر خزانہ اسد عمر ہنگامی دورے پر قطر روانہ ہو گئے ہیں۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ گیس بحران (gas crisis) پر قابو پانے کے لیے موجود حکومت کا اہم اقدام سامنے آیا ہے جس کے پیش نظر اسد عمر قطر کے دورے پر روانہ ہو گئے ہیں۔دورے میں ایل این جی جہازوں کے اضافے کی بات کی جائے گی۔پاکستان قطر سے ہر ماہ ایل این جی کے 6 جہاز منگواتا ہے۔
ذرائع کے مطابق وزیر خزانہ کا ایہ ہنگامی دورہ گیس بحران (gas crisis) کے خاتمے کے لیے اہم اقدام ہے۔جب کہ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے بدھ کو ملک میں گیس کی فراہمی کے سلسلہ میں پیدا ہونے والے بحران کے حوالہ سے اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت کی۔جلاس میں وزیرِ خزانہ اسد عمر، وزیرِ پٹرولیم غلام سرور خان، وزیرِ توانائی عمر ایوب، وزیرِاعظم کے معاون خصوصی افتخار درانی، چیئرمین ٹاسک فورس برائے انرجی ندیم بابر، وفاقی سیکرٹریز اور دیگر افسران نے شرکت کی تھی۔

وزیراعظم عمران خان نے ملک میں گیس کی طلب و رسد اور صارفین کو گیس کی فراہمی کے حوالہ سے منصوبہ بندی کو مزید مربوط بنانے کی ہدایت کی ہے جبکہ ایس این جی پی ایل اور ایس ایس جی سی کی جانب سے گیس کی طلب کے حوالہ سے تخمینہ سازی میں نااہلی کا مظاہرہ کرنے اورکمپریسرز کے حوالہ سے معلومات پوشیدہ رکھنے کا سخت نوٹس لیتے ہوئے دونوں اداروں کے منیجنگ ڈائریکٹرز کے خلاف فوری انکوائری کا حکم دیتے ہوئے وزیرِ پٹرولیم کو یہ کارروائی آئندہ 72 گھنٹوں میں مکمل کرکے رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی تھی۔
لک میں گیس کی مقامی پیداوار کی صورتحال کے حوالہ سے اجلاس کو بتایا گیا کہ اس وقت جنوب میں واقع گیس فیلڈز کی کل پیداوار 1200 ایم ایم سی ایف ڈی ہے جو پچھلے سال کے مقابلے میں 80 ایم ایم سی ایف ڈی کم ہے۔ اسی طرح شمال میں کنڑ پساکی اور گیمبٹ فیلڈ میں بھی گیس پیداوار میں50 ایم ایم سی ایف ڈی کی کمی واقع ہوئی ہے۔ جنوب میں گیس پیداوار کی کمی کے باعث کراچی کے صارفین کو گیس کی فراہمی میں دشواری کا سامنا پیش آیا جبکہ نوابشاہ اور سارن کے مقام پر گیس کمپریسرز کی خرابی کے باعث ملک کے شمال میں گیس کی کمی کی شکایت سامنے آئی۔
وزیرِاعظم کو بتایا گیا کہ نہ تو ایس این جی پی ایل کی جانب سے دسمبر میں گیس کی طلب کے متعلق حقائق سے آگاہ کیا گیا اور نہ ہی ایس ایس جی سی کی جانب سے گیس کمپریسرز کی خرابی کے حوالہ سے بروقت حکومت کو اطلاع دی گئی۔ وزیرِاعظم نے ایس این جی پی ایل اور ایس ایس جی سی کی جانب سے نااہلی کا مظاہر ہ کرنے اورکمپریسرز کے حوالہ سے معلومات پوشیدہ رکھنے کا سخت نوٹس لیتے ہوئے دونوں اداروں کے منیجنگ ڈائریکٹرز کے خلاف فوری انکوائری کا حکم دیتے ہوئے وزیرِ پٹرولیم کو ہدایت کی یہ کارروائی آئندہ 72 گھنٹوں میں مکمل کرکے رپورٹ پیش کی جائے۔ (gas crisis)

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں