consolation

تجاوازت کے خلاف آپریشن میں کوئی گھر نہیں گرایا جائے گا

اسلام آباد(سحرنیوز) تجاوزات کے خلاف آپریشن (consolation) میں اب کوئی گھر نہیں گرایا جائے گا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ حکومت نے اہم فیصلہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ تجاوزات کے زمرے میں آنے والے گھروں کو اب نہیں گرایا جائے گا۔جبکہ ملک بھر میں گھروں کے خلاف جاری آپریشن کو فوری طور پر روک دیا گیا ہے۔رپورٹس میں مزید بتایا گیا ہے کہ حکومت نے سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں تجاوازت کے خلاف آپریشن روکنے کا فیصلہ کر لیاتاہم پبلک پارکس کمرشل مارکیٹ میں تجاوزات کے خلاف آپریشن جاری رہے۔
جب کہ دوسری جانب سپریم کورٹ نے شہر میں تجاوزات (consolation) کے خلاف آپریشن میں میئر کراچی کو گھروں کو توڑنے سے قبل متبادل جگہ فراہم کرنے کا پابند کردیا۔سپریم کورٹ کی جانب سے کراچی میں تجاوزات کے خلاف گرینڈ آپریشن سے متعلق تحریری حکم نامے میں کہا گیا ہیکہ شہر میں تجاوزات کیخلاف آپریشن جاری رکھا جائے اور آپریشن میں تاخیر نہ کی جائے۔

تحریری حکم نامے میں مزید کہا گیا ہیکہ فٹ پاتھ، نالہ، پارک اور رفاہی پلاٹس پر قائم تجاوزات کو توڑدیا جائے، جودکانیں توڑی گئیں ان کی متبادل جگہ فراہمی کی ذمہ داری سندھ حکومت پر ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں. وزیراعظم کی والدہ کی قبر کا احاطہ مسمار کر دیا گیا

حکم نامے کے مطابق ایمپریس مارکیٹ اور اطراف کی دکانداروں کی بحالی کیلئے جلد انتظامات کیے جائیں، توڑی گئی دکانوں کا ملبہ اٹھانیکا انتظام جلد کیا جائے، سندھ حکومت کے ایم سی کو 200 ملین کی گرانٹ فراہم کرنیکی پابند ہوگی۔ عدالت کی جانب سے میئر کراچی کو پابند کیا گیا ہیکہ رہائشی علاقوں میں قبضے کی جگہوں کو صاف کرنے سے قبل 30 سے 40 روز کا نوٹس دینا ہوگا، میئر کراچی ان گھروں کو توڑنے سے قبل متبادل جگہ فراہم کرنے کے پابند ہوں گے۔ (consolation)
عدالت نے میئر کراچی وسیم اختر کو تعمیرات منہدم کرنے کی رپورٹس روزانہ کی بنیاد پر کمشنر کراچی کو فراہم کرنے کی بھی ہدایت کی ہے۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے حکم پر کراچی کے مختلف علاقوں میں تجاوزات (consolation) کے خلاف آپریشن جاری ہے جس میں ایمپریس مارکیٹ، لائٹ ہاؤس اور جامع کلاتھ سمیت دیگر بڑی مارکیٹوں سے تجاوزات کا خاتمہ کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں