flagship reference

نیب نے فلیگ شپ ریفرنس میں نواز شریف کی بریت کے خلاف اپیل دائر کرنے کی تیاری مکمل کر لی

اسلام آباد(سحر نیوز) نیب نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی فلیگ شپ ریفرنس (flagship reference) میں بریت کے خلاف اپیل دائر کرنے کی تیاری مکمل کر لی ہے۔نیب آج اسلام آباد ہائیکورٹ میں احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف اپیل دائر کرے گا۔تفصیلات کے مطابق 24 دسمبر کواحتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے نواز شریف کے خلاف ریفرنسز کا فیصلہ سنایا تھا۔
عدالت نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو فلیگ شپ ریفرنس (flagship reference) میں بری کیا جبکہ العزیزیہ ریفرنس میں مجرم قرار دیتے ہوئے سات سال قید بامشقت کی سزا سنائی ۔ نواز شریف پر 1.5 ملین پاؤنڈز اور 25 ملین ڈالرز کا الگ الگ جُرمانہ بھی عائد کیا گیا جبکہ نواز شریف کو دس سال تک عوامی عہدہ رکھنے کے لیے بھی نا اہل قرار دے دیا گیا۔ عدالت نے نواز شریف کی جائیداد ضبطگی کا بھی حکم دیا جبکہ حسن اور حسین نواز کو مفرور قرار دے کر ان کے دائمی وارنٹس جاری کر دئے۔

یہ بھی پڑھیں. نئے سال کے پہلے ہی دن قومی ٹیم کو بڑی خوشخبری مل گئی

عدالتی فیصلے میں کہا گیا کہ نواز شریف العزیزیہ ریفرنس میں منی ٹریل نہیں دے سکے۔ نواز شریف ہی ہل میٹل اور العزیزیہ کے اصل مالک ہیں۔ فیصلے میں مزید کہا گیا کہ فلیگ شپ ریفرنس (flagship reference) آف شور کمپنیوں سے متعلق ہے لہٰذا فلیگ شپ ریفرنس میں کیس نہیں بنتا اس لیےنوازشریف کوبری کیا جاتاہے۔ فیصلہ سنائے جانے کے بعد عدالت نے نیب کو نواز شریف کو گرفتار کرنے کی اجازت دے دی ، جس کے بعد نواز شریف کو کمرہ عدالت سے گرفتار کر لیا گیا۔
تاہم نیب نے نواز شریف کی فلیگ شپ ریفرنس (flagship reference) میں بریت کے خلاف اپیل دائر کرنے کا اعلان کیا تھا۔اس حوالے سے تازہن ترین خبر یہ ہے کہ نیب نے فلیگ شپ ریفرنس میں نواز شریف کی بریت کے خلاف اپیل دائر کرنے کی تیاری مکمل کر لی ہے جبکہ العزیزیہ ریفرنس میں بھی میاں نواز شریف کو کم سزا ملنے کے خلاف اپیل دائر کی جائے گی۔دونوں اپیلیں کل اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائر کی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں