شہریار آفریدی کے بھتیجے نے ان کا سر شرم سے جھکا دیا

اسلام آباد(سحر نیوز) منشیات کے خلاف مہم چلانے والے وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی (Sheryar Afridi) کے بھیتجے ہی منشیات میں ملوث نکلے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ شہریار آفریدی کے بھتیجے طلال نادر آفریدی کے منشیات سمیت پکڑے جانے کا انکشاف ہوا ہے جسے 2 ساتھیوں سمیت ایف آئی آر درج کر کے جیل بھیج دیا گیا ہے۔رپورٹس میں مزید بتایا گیا ہے کہ طلال نادر آفریدی کے خلاف مقدمہ گذشتہ ماہ 11دسمبر 2018ء کو تھانہ جنڈ اٹک میں درج کیا گیا تھا تاہم اس کی تفصیلات اب سامنے آئی ہیں۔
ایف آئی آر کے مطابق پولیس نے ایک مشکوک گاڑی کو روکنے کی کوشش کی تو ملزمان نے گاڑی بھگا دی۔جس پر پولیس نے گاڑی کا تعاقب کیا اور روک تلاشی لی۔تلاشی لینے پر گاڑی ست آدھا جکلو گرام سے زائد چرس بر آمد ہوئی۔

ملزمان میں سے ایک طلال نادر آفریدی نے اپنا حالیہ پتہ منسٹر کالونی اسلام آباد لکھوایا۔جو وزیر مملکت داخلہ شہریار آفریدی (Sheryar Afridi) کا بھیتجا ہے۔

تھانہ جنڈ کے تفتیشی افسر محمد رمضان نے میڈیا کو بتایا ہے کہ ملزمان کو گرفتار کر کے جیل بھیج دیا گیا تھا۔جب کہ دوسری جانب میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ طلال آفریدی کو ضامنت پر جیل سے رہا کیا جا چکا ہے۔جب کہ اس تمام معاملے پر وزارت داخلہ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ وزیراعظم کرپشن، دہشت گردی اور ڈرگ مافیا کے خلاف جنگ لڑ رہے ہیں اور شہریار آفریدی (Sheryar Afridi) اس جنگ میں صف اول کا کردار ادا کرر ہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں. شہباز شریف کی حکومت کو این آر او کے لیے بڑی پیشکش

مزید کہا گیا کہ قانون کے سامنے وزیر، مشیر یا تحریک انصاف کے کارکن سب برابر ہیں۔کوئی وزیر ہو رشتہ دار قانون اپنا راستہ خود بنائے گی۔واضح رہے شہریار آفریدی پاکستان تحریک انصاف کے رہنما ہیں جب کہ بطوروزیر مملکت برائے داخلہ اپنی خدمات سر انجام کر رہے ہیں۔شہریار آفریدی اپنے خوبصورت لب ولہجے کی وجہ سے بہت شہرت رکھتے ہیں۔شہریا آفریدی کی سوشل میڈیا پر وزیر بننے کے بعد جیل پر اچانک چھاپوں اور قیدیوں کے ساتھ ہمدردانہ رویے کی ویڈیوز بھی وائرل ہوئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں