Member Sindh Assembly

پی ٹی آئی کے رکن سندھ اسمبلی فائرنگ سے زخمی ہو گئے

کراچی (سحر نیوز) : پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی اسمبلی (Member Sindh Assembly) رمضان گھانچی فائرنگ سے زخمی ہو گئے۔فائرنگ کے الزام میں ٹمبر مارکیٹ کے ایک عہدیدار کو بیٹے سمیت حراست میں لے لیا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ ایس ایس پی سٹی مقدس حیدر کے مطابق گھاس منڈی میں واقع پرانا حاجی کیمپ ٹمبر مارکیٹ کے قریب جھگڑے کے دوران فائرنگ سے پی ٹی آئی کے رکن سندھ اسمبلی رمضان گھانچی ٹانگ میں گولی لگنے سے زخمی ہو گئے۔
مقدس حیدر کے مطابق رکن صوبائی اسمبلی (Member Sindh Assembly) کو فوری طور پر سول اسپتال منتقل کر دیا گیا۔جہاں ڈاکٹروں کے مطابق ان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔انہوں نے مزید بتایا گیا ہے کہ فائرنگ کا واقعہ پانی کی لائن کے تنازع پر پیش آیا۔دوسری جانب نیپیر میں واقعے کا مقدمہ درج کر کے فائرنگ کے الزام میں ٹمبر مارکیٹ کے عہدیار سلیمان سومرو اور ان کے بیٹے کو حراست میں لے لیا گیا۔
یہ بھی پڑھیں.منی بجٹ اور اماراتی قرضے کے مثبت اثرات، ڈالر کی قیمت میں کمی، اسٹاک ایکسچینج 7 ہفتوں کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا

نیپیر تھانے کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پی ٹی آئی کراچی چیپٹر کے صدر خرم شیر زمان نے بتایا کہ انہیں رمضان گھانچی (Member Sindh Assembly) کا فون آیا تھا۔جنہوں نے بتایا کہ سلیمان سومرو اور اس کے بیٹے نے گولیاں ماریں۔ان کا کہنا تھا کہ جب ایک ایم پی اے محفوظ نہیں تو عام آدمی کا کیا ہو گا۔خرم شیر زمان نے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ سے مطالبہ کیا ہے کہ حملہ آوروں کے خلاف سخت کاروائی کی جائے۔
انکا مزید کہنا تھا کہ ریاست کی ذمہ داری ہے کہ واقعے میں ملوث ملزمان کو کڑی سزا دی جائے۔خرم شیر زمان کے مطابق واقعہ شہر کے امن کو تباہ کرنے کی کوشش ہے جس پر آج ہونے والے سندھ اسمبلی کے اجلاس میں احتجاج بھی کیا جائے گا۔پاکستان تحریک انصاف کا کہنا ہے کہ جب آج سندھ اسمبلی کا اجلاس ہو گا تو اس میں پاکستان تحریک انصاف کے رہنما پر فارئرنگ کے خلاف احتجاج عمل میں لایا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں