Justice Athar

آپ سیاسی مقدمات عدالت میں کیوں لے آتے ہیں؟

اسلام آباد(سحر نیوز) : گذشتہ روز اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق صدر اور رکن قومی اسمبلی آصف زرداری کیخلاف درخواست سماعت کیلئے مقرر کی تھی۔ ۔آج پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چئیرمین سابق صدر آصف علی زرداری کی ناہلی کے لیے دائر تحریک انصاف کی درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ میں سماعت ہوئی۔دوران سماعت اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس (Justice Athar) نے ریمارکس دئیے کہ آپ سیاسی مقدمات عدالت میں کیوں لے آتے ہیں؟ آپ کا متعلقہ فورم الیکشن کمیشن بنتا ہے، سیاسی لڑائی سیاسی فورم اور پارلیمنٹ میں کرنی چاہئیے۔
چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ (Justice Athar) نے درخوستگزاروں کو کہا کہ عدالت کو مطمئن کرنا ہو گا کہ یہ کیس عوامی نوعیت کا ہے اور عدالت کو اس پر بھی مطمئن کریں کہ اسے ترجیحی بنیادوں پر کیوں سنیں ۔

یہبھی پڑھیں.آصف زرداری کی نااہلی سے متعلق درخواستاعتراض لگا دیا گیا

واضح رہے سپریم کورٹ آف پاکستان نے سابق صدر آصف علی زرداری کی نا اہلی کے لیے دائر درخواستیں اعتراض لگا کر واپس کر دی تھی۔ درخواستیں آصف زرداری کے امریکہ میں مبینہ فلیٹ کی دستاویزات اور ظاہر نہ کیے جانے پر ان کے اثاثوں کی تفصیلات ساتھ جمع کروائی گئی تھیں۔

درخواستوں میں سابق صدر اور رکن قومی اسمبلی آصف علی زرداری کی آئین کے آرٹیکل 62ون ایف کے تحت تاحیات نا اہلی کی استدعا کی گئی تھی۔ درخواستوں میں آصف علی زرداری کی جانب سے چھُپائے گئے اثاثوں کی تفصیلات بھی شامل ہیں۔ درخواست میں کہا گیا کہ آصف علی زرداری نے بیرون ملک کروڑوں روپے کی جائیداد بنائی لیکن اپنے اثاثے چھُپائے۔ آصف زرداری کے نیویارک میں مین ہیٹن اپر ایسٹ میں پانچ لاکھ 30 ہزار ڈالر مالیت کے اپارٹمنٹس کی تفصیلات بھی درخواست کے ساتھ شامل ہیں۔ قبل ازیں رواں ماہ 10 جنوری کو پاکستان تحریک انصاف کے رکن سندھ اسمبلی خرم شیرزمان نے پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کی نا اہلی کے لیے الیکشن کمیشن میں دائر درخواست واپس لے لی تھی۔ (Justice Athar)

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں