Mamnon Hussain

میری دعا ہے کہ میاں صاحب آج ہی باہر آجائیں

(Mamnon Hussain)
KCF

اسلام آباد (سحر نیوز ) : سابق صدر ممنون حسین (Mamnon Hussain) آج کوٹ لکھپت جیل میں قید سابق وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات کے لیے پہنچے ۔ ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق صدر ممنون حسین نے کہا کہ ہم نواز شریف سے عقیدت کا اظہار کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا نواز شریف سے تعلق ہے ، ان کی صحت اتنی اچھی نہیں تھی۔ میری دعا ہے کہ میاں صاحب آج ہی باہر آ جائیں، میاں صاحب کو اللہ کی طرف سے انصاف ضرور ملے گا۔
سابق صدر ( Mamnon Hussain) نے میڈیا سے گفتگو میں موجودہ حکومت کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ عمران خان ملک کو ٹھیک طرح نہیں چلا رہے۔ انہیں چاہئیے کہ وہ پہلے ملک کی معیشت کو ٹھیک کریں اور موجودہ صدر کے بارے میں مجھے علم نہیں ہے۔ واضح رہے کہ آج کوٹ لکھپت جیل میں قید سابق وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات کا دن ہے جس کے لیے لیگی رہنما کی کوٹ لکھپت آمد کا سلسلہ جاری ہے۔

یہ بھی پڑھیں.سعودی ولی عہد کے دورہ پاکستان کی تاریخ کا اعلان کردیا گیا

لیگی رہنما سیف الملوک کھوکھر بھی پارٹی قائد سے ملاقات کے لیے کوٹ لکھپت جیل پہنچے۔ سیف الملوک کھوکھر کا کہنا تھا کہ اپنے قائد سے ملنا ہر انسان اور کارکن کا آئینی حق ہے۔ حکومت کو چاہیئے کہ اپنا کام کرے اور سیاسی انتقام نہ لے۔ اس کے علاوہ مئیر لاہور کرنل ریٹائرڈ مبشر جاوید کی بھی کوٹ لکھپت جیل پہنچے۔ جیل کے باہر ان کا کہنا تھا کہ ہمارے قائد کو غلط طریقے سے جیل میں رکھا ہوا ہے۔
اس کے علاوہ مسلم لیگ ن کے دیگر کارکنان اور پارٹی رہنماوں کا بھی کوٹ لکھپت جیل آمد کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے۔ اس سے قبل پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما آصف کرمانی اور ڈپٹی اسپیکر پنجاب اسمبلی سردار شیر علی گورچانی نے بھی سابق وزیر اعظم نواز شریف سے ملاقات کی۔ نواز شریف سے آج کوٹ لکھپت جیل میں ملاقات کے لیے دوپہر 2 بجے تک کا وقت مقرر ہے۔ اس دوران نواز شریف کے اہل خانہ اور پارٹی رہنماؤں سمیت دیگر افراد ان سے ملاقات کریں گے۔ اس موقع پر جیل کے باہر سکیورٹی خدشات کو مد نظر رکھتے ہوئے پولیس کی اضافی نفری تعینات کی گئی ہے۔ پارٹی رہنماؤں کی گاڑیوں کو جیل کے باہر روکا گیا اور صرف حتمی فہرست کے تحت ہی لیگی رہنماؤں کو اندر جانے کی اجازت دی جارہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں