جج ارشد ملک (arshad malik)کو بلیک میل کرنے والامیاں طارق گرفتار

ملزم کے قبضے سے برآمد ویڈیوزکا فرانزک ٹیسٹ کروالیا گیا ہے. ایف آئی اے ذرائع

اسلام آباد(سحرنیوزاخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔17 جولائی۔2019ء) احتساب عدالت کے
سابق جج ارشدملک (arshad malik)بلیک میلنگ اسکینڈل میں بڑی پیش رفت ہوئی ہے ،
احتساب عدالت کے جج ارشد ملک(arshad malik) کی ویڈیو بنا نے والے میاں طارق کو حراست میں لے لیا گیا.
تفصیلا ت کے مطابق جج ارشدملک بلیک میلنگ اسکینڈل کے مرکزی ملزم میاں طارق کو ایف آئی اے کے
سائبر کرائم ونگ نے گرفتار کرلیا ہے ، میاں طارق دبئی فرار ہونے کی کوشش کررہے تھے.
ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم میاں طارق کی گرفتاری عین اس لمحے عمل میں آئی جب وہ ملک
چھوڑ کرفرار ہونے کی کوشش کررہے تھے، گرفتاری کے بعد انہیں سخت سیکورٹی میں عدالت پیش کیا گیا.

عدالت میں پیش کرنے کے لیے میاں طارق کو انتہائی سخت سیکورٹی حصار میں بکتر بند گاڑی
کے ذریعے سول کورٹ لایا گیا، دوران سماعت ایف آئی اے تفتیشی افسر نے بتایا کہ ملزم طارق محمود ملتان
کا رہائشی و کاروباری شخصیت ہے اور جج ارشد ملک(arshad malik) ویڈیو اسکینڈل میں بھی ملوث ہے، اسے اسلام آباد کے
علاقے ایف سیون سے 16 جولائی کو گرفتار کیا گیا.

حافظ سعید (Hafiz Saeed) کسی بھی قسم کی دہشتگردی میں ملوث نہیں رہے

جج شائستہ کنڈی نے ملزم سے پوچھا کہ آپ کیا کاروبارکرتے ہیں؟ملزم طارق محمود نے جواب دیا کہ میں
ملتان میں ایل ای ڈیز کا بزنس کرتا ہوں‘ جج شائستہ کنڈی نے ملزم سے استفسار کیا کہ آپ پر تشدد کیا گیا ہے؟
ملزم نے کہا کہ اسے تشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے اور اس کا ہاتھ بھی توڑ دیا گیا ہے اس نے اپنی شرٹ اتار کر
دکھائی جج شائستہ کنڈی نے کہا کہ ملزم کے جسم پر تشدد کے نشانات ہیں.
تفتیشی افسر نے کہا کہ ملزم جھوٹ بول رہا ہے، یہ بہت تیز اور مکمل منظم لوگ ہیں جو پورے نظام کو پٹری
سے اتارنا چاہتے تھے. ایف آئی اے نے ملزم کا 10 روزہ جسمانی ریمانڈ دینے کی استدعا کی‘ عدالت نے
ملزم میاں طارق محمود کو دو روزہ جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے کردیا عدالت نے حکم دیا کہ
تفتیشی افسر ملزم کو 19 جولائی کو میڈیکل رپورٹ کیساتھ پیش کریں میاں طارق محمود پر الزام ہے کہ
اس نے اپنے بھائی کی مدد سے جج ارشد ملک (arshad malik)کی مبینہ ویڈیو بنائی اور
نواز شریف کو فروخت کی.واضح رہے کہ نواز شریف کو العزیزیہ ریفرنس میں سزا سنانے
والے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک(arshad malik) کے خلاف مبینہ ویڈیو اسکینڈل سامنے آیا ہے
اور نون لیگ نے الزام لگایا ہے کہ ارشد ملک کو بلیک میل
کرکے نواز شریف کو سزا دینے پر مجبور کیا گیا. جج ارشد ملک(arshad malik) نے اس دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے
کہ نون لیگ نے انہیں نواز شریف کے حق میں فیصلہ سنانے کے لیے رشوت کی پیش کش کی اور دھمکیاں دیں.
یاد رہے کہ میاں طارق محمود ملتان کا رہائشی ہیں، میاں طارق کی فوارہ چوک کے قریب طارق ٹی وی سینٹر
کے نام سے دکان ہے، طارق محمود کو معاملات طے کرانے میں ماہر سمجھا جاتا ہے، اسی شخص نے جج
کی ملتان میں تعیناتی کے دوران مبینہ ویڈیو حاصل کی، طارق محمود اسمگل شدہ ٹی وی، ایل ای ڈیز کی خرید
و فروخت میں بھی ملوث ہیں. ذرائع کے مطابق طارق محمود کا بڑا بھائی میاں ادریس اسمگلنگ کیس میں گرفتار
رہ چکا ہے، میاں طارق کے پاس کئی اہم شخصیات کی مبینہ ویڈیوزبھی موجود ہیں، ویڈیو منظرعام پرآنے کے
بعد جج ارشد ملک(arshad malik) میاں طارق سے ملنے ملتان بھی آئے تھے.
خیال رہے کہ میاں طارق محمود ہر دور میں اعلیٰ افسران وسیاسی شخصیات سے رابطے میں رہے ہیں،
میاں طارق محمود کو تعلقات بنانے کا ماہر بھی سمجھا جاتا ہے.ایف آئی اے ذرائع کے مطابق میاں طارق
کی گرفتاری ایف آئی اے اسلام آباد کے سائبر کرائم ونگ نے کی، ملزم کے گھر سے ویڈیو بھی
برآمد کی گئی جس کا فرانزک کرالیا گیا ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں