حافظ سعید (Hafiz Saeed) کسی بھی قسم کی دہشتگردی میں ملوث نہیں رہے

بھارت کبھی بھی حافظ سعید (Hafiz Saeed)کے خلاف ثبوت پیش نہیں کر سکا، دفاعی تجزیہ کار امجد شعیب کی گفتگو

لاہور (سحرنیوزتازہ ترین اخبار۔ 17 جولائی 2019ء) : آج سی ٹی ڈی نے حافظ سعید (Hafiz Saeed) کو گرفتار کرلیا ۔
اسی پر تجزیہ پیش کرتے ہوئے معروف تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ یہ گردفتاری عالمی اداروں کے دباؤ کی وجہ سے ہے۔
اسی پر گفتگو کرتے ہوئے وفاعی تجزیہ نگار امجد شعیب کا کہنا تھا کہ حافظ سعید کی
گرفتاری کو قانونی طور پر دفاع کرنا بہت ضروری ہے۔
بھارت آج تک حافظ سعید (Hafiz Saeed)پر کئی الزمات لگاتا رہا تاہم ان کے خلاف کوئی ثبوت پیش نہیں کر سکا
جس وجہ سے عدالت حافظ سعید کو سزا سنا سکے۔
اس سے قبل انہیں کئی بار ہاؤس ارسٹ کیا گیا لیکن پھر عدالتوں نے ہی ان کو رہا کیا۔کیونکہ ہمارے پاس ایسے
شواہد نہیں تھے جس کی بنا پر انہیں حراست میں لیا جا سکے گا۔اب اگر حافظ سعید (Hafiz Saeed) کو گرفتار کیا گیا
تو ان کے خلاف کوئی نہ کوئی شواہد موجود ہونے چاہئیے۔

احتساب عدلیہ (Judiciary)کے دروازے تک جا پہنچا

جب کہ اسی حوالے سے برگیڈئیر (ر) غضنفر علی نے بھی یہی کہا کہ حافظ سعید (Hafiz Saeed)کو
عالمی دباؤ کے تحت گرفتار کیا گیا ہے کیونکہ اب عمران خان امریکا بھی جا رہے ہیں اور امریکا نے
بی ایل کو دہشت گرد تنظیم قرار دے دیا ،حافظ سعید کا نام کشمیر کحوالے سے سامنے آتا رہا ہے
لیکن حافظ سعید کا بارے میں دہشت گردی کے حوالے سے کوئی ثبوت موجود نہیں ہیں۔

جب انڈیا سے ہمارے تعلقات خراب ہوتے ہیں تو ان کا اشارہ اسی طرف ہوتا ہے۔ بھارت نے کشمیر کے
ایشو کو دبانے کے لیے حافظ سعید (Hafiz Saeed)کے ایشو کو بہت اٹھایا۔لیکن ایسا کوئی ثبوت موجود نہیں ہے
جس پر حافظ سعید کے بارے میں یہ کہا جائے
کہ انہیں دہشت گردی کیی بنا پر گرفتار کیا گیا۔خیال رہے کالعدم جماعت الدعوہ کے
سربراہ حافظ محمد سعید کو محکمہ انسدادِ دہشت گردی
(سی ٹی ڈی) نے گرفتار کر لیا ہے‘سی ٹی ڈی ذرائع کا کہنا ہے کہحافظ محمد سعید (Hafiz Saeed)
لاہور سے گوجرانوالہ جا رہے تھے کہ راستے میں سی ٹی ڈی نے ان کو حراست میں لے لیا ہے.
حافظ سعید (Hafiz Saeed) کی گرفتاری کی ان کے خاندانی ذرائع نے بھی تصدیق کی ہے‘
ماہِ رواں میں حافظ سعید نے اپنے خلاف درج مقدمات پر لاہور ہائی کورٹ سے رجوع کیا تھا.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں