وزیراعظم عمران خان (prime minister imran khan)اپنا خرچہ خود اٹھاتے ہیں،زلزلہ زدگان فنڈ نہیں کھاتے

آپ لوگوں نے پاکستان کے خزانے کا دیوالیہ نکال دیا،علی محمد خان

لاہور ۔ (سحرنیوزاخبارتازہ ترین۔ 17 جولائی2019ء) گزشتہ روز قومی اسمبلی کا اجلاس اس وقت مچھلی منڈی
کی صورت اختیار کر گیا جب خواجہ آصف کی طرف سے حکومت پر مہنگائی کا الزام لگانے کے ساتھ ساتھ
اپوزیشن لیڈران کو جیل میں قید رکھنے کی تنقید کی گئی۔ان کی تقریر کے جواب میں پی ٹی آئی راہنما علی محمد
نے بھی جوابی تنقید کے نشتر برسائے اور انہیں دو ٹوک الفاظ میں للکارتے ہوئے کہا کہ آپ اپنی تین دہائیوں کی
حکومت کا حساب دے دیں اور ہم دس ماہ کا حساب دے دیتے ہیں۔
علی محمد خان نے کہا ہے کہ پروڈکشن آرڈر کے پیچھے چھپنا نہیں چاہیے، سابق حکمرانوں نے قومی خزانے
کو شدید نقصان پہنچایا، احتساب کا عمل ہر صورت جاری رہے گا، خزانہ لوٹنے والوں سے ایک ایک پائی واپس
لیں گے۔پی ٹی آئی رہنما علی محمد خان نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا ایسا لگتا ہے خواجہ آصف
آج ہی پاکستان آئے ہیں، زلزلہ متاثرین کے فنڈز میں خورد برد کا الزام ہم نے نہیں لگایا۔

پنجاب حکومت نے خادم حسین رضوی(khadim hussain rizvi) کی ضمانت کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کر لیا

آپ میں ہمت ہے تو اپنے لیڈر سے جا کر پوچھیں، ماضی میں ملکی وسائل کا بے دریغ استعمال کیا گیا۔
وزیراعظم عمران خان (prime minister imran khan)اپنا خرچہ خود اٹھاتے ہیں۔علی محمد خان کا کہنا تھا
سابق وزیراعظم (prime minister imran khan)نے ملک کے پیسوں سے بیرون ملک دورے کیے۔
میں 10 ماہ اور آپ اپنے 35، 40 سال کا حساب دیں، خواجہ آصف شاید خوابوں میں وزیر دفاع رہے۔
گزشتہ 40 سال جمہوریت اور اپوزیشن میں آنکھ مچولی کھیلی گئی، آمروں نے بار بار آئین کو پامال کیا،
پاکستان کے خزانے کا دیوالیہ کس نے نکالا ؟اگر خواجہ آصف کے پاس میری ان باتوں کا جواب ہے
تو آئیں میرے ساتھ حساب کر لیں۔
اتنے عرصے تک ملک کے سیاہ سفید کے مالک رہنے والے آج ہمیں مہنگائی کی باتیں سناتے ہیں۔
یہ مہنگائی سابقہ حکومتوں جن کا یہ حصہ تھے کی غلط پالیسیوں اور حد سے زیادہ قرضے لینے
کی وجہ سے ہو رہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں