وزیراعظم عمران خان کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ(Donald Trump) سے اہم ملاقات

Donald Trump

ملاقات میں شکیل آفریدی کی حوالگی کے بدلے میں عافیہ صدیقی کی رہائی کا مطالبہ کیا جا سکتا ہے۔امریکہ طالبان کو
جنگ بندی پر راضی کرنے کے لیے پاکستان کے اہم کردار کا خواہشمند ہے۔ ذرائع

اسلام آباد ( تازہ ترین اخبار۔ 22 جولائی 2019ء) : وزیراعظم پاکستان عمران خان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ (Donald Trump)
کے مابین آج وائٹ ہاؤس میں ملاقات ہو گی۔ ڈونلڈ ٹرمپ اور عمران خان کی ملاقات پاکستانی وقت کے مطابق
رات آٹھ بج کر 45 منٹ پر ہو گی۔ اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکہ طالبان کو جنگ بندی پر راضی
کرنے کے لیے پاکستان کے اہم کردار کا خواہشمند ہے۔

ملاقات میں امریکہ میں غیر قانونی طور پر مقیم 8 ہزار پاکستانیوں کی واپسی کا معاملہ بھی زیر غور آئے گا۔
ذرائع نے بتایا کہ اس اہم ملاقات میں شکیل آفریدی کی حوالگی کے بدلے میں ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کا
مطالبہ بھی کیا جا سکتا ہے۔ خیال رہے کہ وزیراعظم عمران خان کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ (Donald Trump)
سے آج ہونے والی اس ملاقات کو خاصی اہمیت دی جا رہی ہے۔

امریکا (United States)کی وزیراعظم کو اپنا مہمان بنا کر رہائش کی پیشکش

سیاسی مبصرین کے مطابق آج عمران خان اور ڈونلڈ (Donald Trump)ٹرمپ کے مابین ہونے والی ملاقات پاک
امریکہ تعلقات کو ایک نئی سمت دینے کے لیے کافی اہم ہے۔ یہی وجہ ہے کہ پوری دنیا کے
میڈیا کی نظریں اس ملاقات پر ٹکی ہوئی ہیں۔ وزیراعظم عمران خان کے ہمراہ وزیر خارجہ
شاہ محمود قریشی، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ اور وزیراعظم کے مشیر برائے
تجارت عبدالرزاق داؤد بھی ہوں گے۔

جبکہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ بھی عمران ٹرمپ ملاقات میں شریک ہوں گے۔
ملاقات میں دونوں رہنماؤں کے درمیان افغان امن عمل، باہمی تعاون کے فروغ ، تجارت، توانائی
، دفاع اور جنوبی ایشیا میں انسداد دہشت گردی جیسے امور زیر غور آئیں گے۔وائٹ ہاؤس آمد پر
امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنے خصوصی مہمان وزیراعظم عمران خان کا استقبال کریں گے۔
وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر کے درمیان دو ملاقاتیں شیڈول ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں