نیب نے مریم(maryam) نواز، حسن نواز اور حسین نواز کو طلب کر لیا

maryam

نیب نے تینوں کو 31 جولائی کو غیر قانونی اثاثوں کے کیس میں نیب لاہور میں پیش ہونے کی ہدایات کر دی

لاہور ( تازہ ترین اخبار۔ 24 جولائی 2019ء) : نیب نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم (maryam)
نواز اور صاحبزادوں حسن نواز اور حسین نواز کو طلب کر لیا ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے
کہ تینوں کو غیر قانونی اثاثوں کے کیس میں طلب کیا ہے۔نیب نے تینوں کو 31 جولائی کو نیب
لاہور میں پیش ہونے کی ہدایات کر دی ہے۔سابق وزیراعظم نواز شریف اور
حمزہ شہباز شریف پہلے ہی جیل میں قید ہیں۔

جب کہ نواز شریف کے بھائی شہباز شریف اور ان کے اہل خانہ کے خلاف
پہلے ہی اس سلسلے میں تحقیقات کی جا رہی ہیں۔بظاہر لگتا ہے پورا شریف خاندان
ہی غیر قانونی اثاثے بنانے کے الزام میں مشکل میں پھنس چکا ہے۔مریم نواز کو نیب
نے گذشتہ ہفتے جعلی ٹرسٹ ڈیڈ کیس میں بھی طلب کیا تھا۔ واضح رہے احتساب عدالت نے
مریم(maryam) نواز کے خلاف نیب کی جعلی ٹرسٹ ڈیڈ کی درخواست مسترد کر دی تھی۔

خوشخبری! پنجاب حکومت کا فری وائی فائی(Wi-Fi) منصوبہ بحال کرنے کا فیصلہ

وران سماعت جج نے کہا کہ نیب بتائے کہ اس الزام پر مزید کیا چاہتے ہیں۔
دوران سماعت مریم(maryam) نواز کو جج نے یہ بھی کہا کہ آپ اپنے وکیل
کو بولنے دیں۔عدالت نے کہا کہ جب کبھی مرکزی اپیل پر فیصلہ آئے گا تو
پھرعدالت دیکھے گی۔اس کے ساتھ ہی عدالت نے مریم نواز کے خلاف نیب
کی درخواست مسترد کر دی ۔یاد رہے کہ اسلام آباد کی احتساب عدالت نے
ایون فیلڈ ریفرنس کیس میں سابق وزیرِاعظم نواز شریف کو 10 سال قید،
ایک ارب 29 کروڑ روپے جُرمانہ، مریم نوازکو سات سال قید، 32 کروڑ
روپے جُرمانہ، شریف فیملی کے ایون فیلڈ اپارٹمنٹس بحقِ سرکار ضبط کرنے
کا حکم اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو بھی ایک سال قید بامشقت کی سزا سنائی تھی۔

جس کے بعد سابق وزیراعظم نواز شریف، ان کی بیٹی مریم(maryam) نواز
اور داماد کیپٹن (ر) صفدر کی جانب سے ایون فیلڈ ریفرنس میں سزا کا فیصلہ
اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کیا گیا تھا۔ بعد ازاں گذشتہ برس ستمبر میں
اسلام آباد ہائیکورٹ نے ایون فیلڈ ریفرنس میں احتساب عدالت کی جانب سے
سابق وزیراعظم نواز شریف،ان کی صاحبزادی مریم نواز اور
داماد کیپٹن (ر) صفدر کو سنائی گئی سزا معطل کرتے ہوئے تینوں کی رہائی کا حکم دے دیا تھا
جس کے بعد انہیں اڈیالہجیل سے رہا کردیا گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں