ایف بی آرنے درآمدی موبائل (mobile)پر ایکسائز ڈیوٹی سلیب جاری

mobile

30 ڈالر سے زائد مالیت کے موبائل پر135 روپے ٹیکس عائد ہوگا، اسی طرح 100 ڈالر مالیت کے
موبائل پر 1320 روپے اور500 ڈالر سے زائد مالیت کے موبائل پر9 ہزار270 روپے ٹیکس ہوگا

لاہور( اخبارتازہ ترین۔26 جولائی 2019ء) فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے درآمدی موبائل(mobile) پر
ایکسائز ڈیوٹی سلیب جاری کردیے، جس کے تحت 30 ڈالر سے زائد مالیت کے موبائل
پر 135روپے ٹیکس عائد ہوگا،اسی طرح 100ڈالر مالیت کے موبائل پر 1320روپے اور
500 ڈالر سے زائد مالیت کے موبائل پر9 ہزار 270روپے ٹیکس ہوگا۔میڈیا رپورٹس کے
مطابق فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے درآمدی موبائل پر ایکسائز ڈیوٹی سلیب جاری کردیے ہیں۔

بتایا گیا ہے کہ 30 ڈالر سے زائد مالیت کے موبائل (mobile)پر 135روپے ٹیکس عائد ہوگا۔ 30 تا100 ڈالر
سے مالیت کے موبائل پر 1320روپے ٹیکس عائد ہوگا۔ 100 تا200 ڈالر تک مالیت کے
موبائل(mobile) پر 1680روپے ٹیکس عائد ہوگا۔200 تا350 ڈالر تک مالیت کے موبائل پر
1740روپے، اور 350 سے 500 ڈالر تک مالیت کے موبائل پر 1740روپے ٹیکس عائد ہوگا۔

اسحاق ڈار(ishaq dar) کے گھر کا کنٹرول لے لیا گیا

اسی طرح 500 ڈالر سے زائد مالیت کے موبائل(mobile) پر9 ہزار 270 روپے ٹیکس ہوگا۔

اسی طرح درج ریٹیل پرائس سے کم قیمت پرسگریٹ کی فروخت جرم ہوگی۔غیرتیارشدہ تمباکو
پر فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی 300 سے کم کرکے 10روپے کردی گئی ہے۔ سیمنٹ پر فیڈرل ایکسائز
ڈیوٹی ڈیڑھ روپے سے بڑھا کر2روپے فی کلو کردی گئی ہے۔اسی طرح پچاس ہزار سے زائد
خریداری پر شناختی کارڈ کی شرط یکم اگست سے لاگو ہوجائے گی۔ فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے
درآمدی اور مقامی گاڑیوں کے ایکسائز ڈیوٹی سلیب جاری کردیے۔

جس کے تحت درآمدی گاڑی پر 2.5 سے 30 فیصد تک ٹیکس عائد کیا گیا ہے۔1000سی سی
گاڑی پر 2.5فیصد ڈیوٹی عائد کردی گئی۔1800سی سی گاڑی پر 5 فیصد ڈیوٹی عائد کردی گئی۔
اسی طرح 3000 سی سی گاڑی پر 25 فیصد ڈیوٹی عائد کردی گئی۔اس کے برعکس مقامی گاڑیوں
پر 2.5سے 7.5فیصد تک ٹیکس عائد کیا گیا ہے۔ مقامی گاڑیوں پر 2000 سی سی کی گاڑی پر
7.5فیصد ڈیوٹی وصول کی جائے گی۔ دوسری جانب پاکستان کسٹمز نے طورخم بارڈرپرتجارت
کے فروغ کیلئے آپریشن تیز کردیا ہے۔
چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی نے کہا کہ وزیراعظم کی ہدایت پرپاکستان کسٹمزنے طورخم بارڈرپر
اضافی اسٹاف تعینات کردیا۔ طورخم بارڈرپر کسٹمز کلیئرنس کے لیےعملہ3 شفٹوں میں کام کرے گا۔
طورخم بارڈرسے افغانستان سے تجارتی حجم میں اضافہ کیا جاسکتا ہے۔12 ہزارمسافر روزانہ کی
بنیاد پرطورخم بارڈر سے گزرتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں