پاک سر زمین پارٹی(Pak Sarzameen Party) کے رہنما مصطفیٰ کمال نے نیب سے معذرت کر لی

Pak Sarzameen Party

نیب نے مصطفیٰ کمال کو نازیبا زبان استعمال کرنے پر نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ کیا تھا

کراچی ( تازہ ترین اخبار۔ 30 جولائی 2019ء) : پاک سر زمین پارٹی (Pak Sarzameen Party)کے سربراہ مصطفیٰ کمال
نے قومی احتساب بیورو (نیب) سے معذرت کر لی ہے۔ تفصیلات کے مطابق مصطفیٰ کمال نے
نیب سے معذرت کر لی۔ انہوں نے کہا کہ نیب کی جانب سے ایک پریس ریلیز جاری کی گئی ہے۔
نیب پریس ریلیز پر مجھ پر الزامات عائد کیے گئے۔ میری کسی بات سے نیب کی دل آزاری ہوئی
تو میں معذرت کرتا ہوں۔

خیال رہے کہ نیب نے ادارے کے خلاف نازیبا زبان استعمال کرنے پر مصطفیٰ کمال کو نوٹس
جاری کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ قومی احتساب بیورو (نیب ) نے چیئرمین پی ایس پی مصطفیٰ کمال
کوقانونی نوٹس بھیجنےکا فیصلہ کرتے ہوئے کہا کہ پی ایس پی چئیرمین مصطفیٰ کمال نے میڈیا
سے نیب افسران کے خلاف نازیبا گفتگو کی۔ نیب کی جانب سے جاری اعلامیہ میں کہا گیا کہ
نوٹس میں کہا جائے گا کہ مصطفیٰ کمال اپنے الفاظ پر معافی مانگیں، اگر مصطفیٰ کمال نے
اپنےالفاظ پرمعافی نہ مانگی تو عدالت سے رجوع کیا جائےگا۔

کفایت شعاری پالیسی ہوا ہو گئی، صدر مملکت(President of Pakistan) کا گفٹ ، انٹر ٹینمنٹ اورصوابدیدی فنڈ پر پابندی سے استثنیٰ کا مطالبہ

نیب کا مزید کہنا تھا کہ نیب قومی ادارہ ہےاوربدعنوانی کے خاتمے کے لیے اقدامات کررہا ہے،
مصطفیٰ کمال کی نازیبا گفتگو نیب کی ساکھ مجروح کرنے کی ایک مذموم کوشش ہے۔ قومی
احتساب بیورو نے کہا کہ مصطفیٰ کمال نیب پرتنقید کے بجائے اپنی توانائی مقدمے میں دفاع پر
خرچ کریں۔ یاد رہے کہ احتساب عدالت میں مصطفیٰ کمال کے خلاف سرکاری پلاٹوں کی غیرقانونی
الاٹمنٹ سےمتعلق کیس زیر سماعت ہیں جبکہ انہوں نے اپنے خلاف دائر کیے جانے والے اس
کیس میں سندھ ہائی کورٹ سے ضمانت قبل از گرفتاری حاصل کررکھی ہے۔
پیشی کے موقع پر مصطفیٰ کمال نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ ریفرنس کےعنوان پر
مجھےغیر قانونی الاٹمنٹ کیس میں شامل کیا گیا ، کیس میں کہیں غیر قانونی الاٹمنٹ کا ذکر نہیں،
عنوان مجھ سےمنسوب کیا گیا اسے ہٹایا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں