مریم نواز(Maryam Nawaz) اور مریم اورنگزیب کو گرفتار کرنے کا فیصلہ

چئیرمین سینیٹ کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ سے قبل مجھے بتایا گیا تھا کہ جلد مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے خلاف مقدمات اور گرفتاریوں میں طوفان آئے گا۔ سینئیر صحافی اعزاز سید کا کالم میں دعویٰ

Maryam Nawaz

اسلام آباد ( تازہ ترین اخبار۔3اگست 2019ء) معروف صحافی اعزاز سید کا اپنےکالم “اپوزیشن ناکام کیوں ہوئی” میں چئیرمین سینیٹ کے خلاف تحریک عدم اعتماد ناکام ہونے کے بعد کی صورتحال پر لکھا ہے کہ مجھے چئیرمین سینیٹ کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ سے قبل بتایا گیا تھا کہ جلد مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے خلاف مقدمات اور گرفتاریوں میں طوفان آئے گا۔اس بار گرفتاریوں کی فہرست میں مسلم لیگ ن کی رہنما مریم نواز (Maryam Nawaz)اور ن لیگ کی ترجمان مریم اورنگزیب شامل ہیں۔اس کے علاوہ پارٹی کے جنرل سیکرٹری احسن اقبال اور جاوید لطیف بھی شامل ہیں۔اعزاز سید نے مزید لکھا ہے کہ وفاقی کابینہ کا ایک رکن نیب لاہور کے سربراہ کو قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں شہباز شریف کی گرفتاری کے بارے میں اکثر رابطہ کر کے اصرار کرتا ہے یعنی شہباز شریف کی ایک بار پھر گرفتاری عمل میں لائی جائے گی۔

کیا مریم نواز نے کیپٹن (ر) صفدر(captain safdar) کو مارا پیٹا ؟

گرفتاریوں کا یہ سلسلہ صرف ن لیگ کے خلاف ہی نہیں بلکہ پیپلز پارٹی کے چند رہنماؤں کی گرفتاریاں بھی عمل میں لائی جائیں گی۔واضح رہے کہ پاکستان مسلم لیگ ن کے تاحیات قائد نواز شریف پہلے ہی جیل میں قید ہیں۔اس کے علاوہ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی بھی زیر حراست ہیں۔پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہاز بھی جیل میں قید ہیں۔ان دنوں مریم نواز (Maryam Nawaz)نے پارٹی کی کمان سنبھالی ہوئی ہے۔وہ مختلف شہروں میں ریلیوں سے بھی خطاب کر رہی ہیں اور حکومت کو کافی ٹف ٹائم دے رہی ہیں۔ایسے میں اگر مریم نواز کی گرفتاری عمل میں لائی جاتی ہے تو ن لیگ کے لیے سخت مشکلات پیدا ہوں گی۔سینئیر تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ چونکہ مریم نواز (Maryam Nawaz)سیاسی میدان میں خاصی متحرک ہیں لہذا ان کی گرفتاری کی بھی تیاریاں کی جا رہی ہیں۔اسی حوالے سے صحافی نے آج کالم میں دعویٰ بھی کیا ہے کہ جلد مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی کے خلاف مقدمات اور گرفتاریوں میں طوفان آئے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں