بھارتی وزیراعظم نےمسئلہ کشمیرپرامریکی صدر(American Sadar)کی ثالثی سےانکارکردیا

ٹرمپ اورمودی کے درمیان فرانس میں ملاقات، کشمیرکی صورتحال پرتبادلہ خیال، فی الحال ہمیں بات کرنے دیں،کسی ثالث کی ضرورت نہیں،ضرورت پڑی توآپ کو بلائیں گے، پاکستانی وزیراعظم کوپیغام دیا ہے کہ غربت کیخلاف ملکرلڑیں۔ بھارتی وزیراعظم نریندرمودی

American Sadar

لاہور(اخبارتازہ ترین۔26 اگست 2019ء) بھارتی وزیراعظم نریندرمودی نےمسئلہ کشمیر پر امریکی صدر(American Sadar) کی ثالثی سے انکار کردیا، انہوں نے کہا کہ کشمیر کی صورتحال کنٹرول میں ہے، مسئلہ کشمیر پرکسی ثالث کی ضرورت نہیں،پاکستانی وزیراعظم کو یہ پیغام دیا جارہا ہے کہ غربت کے خلاف ملکر لڑیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکی صدر(American Sadar) ڈونلڈ ٹرمپ اور بھارتیوزیراعظم نریندرمودی کے درمیان جی سیون سمٹ کے دوران فرانس میں ملاقات ہوئی ہے۔ملاقات میں خطے کی صورتحال اور کشمیر ایشو پر بات چیت کی گئی۔ مریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپنے کہا کہ پاکستا ن اور بھارت دونوں ممالک کے وزراء اعظم سے اچھے تعلقات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کو ملکر مسئلہ کشمیر حل کرنا ہوگا۔ مقبوضہ کشمیر معاملے پر گزشتہ روزبھی بات ہوئی۔

پاکستان کا ایک اقدام جس سے کشمیر(kashmir) کو اس کی خصوصی حیثیت واپس مل سکتی ہے

کشمیر کے مسئلے پر پاکستان سے بھی بات ہوئی ہے۔ اس موقع پر بھارتی وزیراعظم نریندرمودی نے کہا کہ پاک بھارت کے درمیان کسی مسئلے میں ثالث کی ضرورت نہیں۔مسئلہ کشمیر پاکستان اور بھارت کے درمیان ہے۔ جس پر امریکی صدر(American Sadar) ٹرمپ نے کہا کہ اگر معاملہ باہمی ہے تو پہلے ہی حل ہوجانا چاہیے تھا۔ پاکستان اور بھارتملکر غربت کے خلاف لڑیں۔ پاکستانی وزیراعظم کو یہ پیغام بھی دیا ہے کہ غربت کے خلاف ملکر لڑیں۔ مودی نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے تمام مسائل دوطرفہ ہیں، دوطرفہ مسائل کے حل کیلئے ہم کسی تیسرے ملک کو زحمت نہیں دیتے۔اس وقت کشمیر کی صورتحال کنٹرول میں ہے۔ فی الحال ہمیں بات کرنے دیں ،آپ کی ضرورت پڑی تو ضروربلائیں گے۔ مودی سے کہا ہے کہ پاکستان سےمسئلہ کشمیر کے حل کیلئے بات کرے۔ واضح رہے فرانس کے درالحکومت پیرس میں بھارتی وزیر اعظم مودی کی آمد پر یونیسکو ہیڈ کوارٹر کے سامنے کشمیری، پاکستانی اور یورپ سے سکھ کمیونٹی کے لوگوں نے بھارتی وزیراعظم مودی کے خلاف احتجاجی مظاہرے کیے۔مظاہرے میں یورپ بھر سے بھاری تعداد میں کشمیر ،پاکستانی اور سکھ کمیونٹی نے شرکت کی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق فرانس کے درالحکومت پیرس میں بھارتی وزیر اعظم مودی کی آمد پر یونیسکو ہیڈ کوارٹر کے سامنے کشمیری پاکستانی کمیونٹی اور یورپ بھر کے سکھ کمیونٹی کے لوگوں نے مودی کے خلاف مظاہرے کیے۔ مظاہرے میں یورپ بھر سے بھاری تعداد میں کشمیر ،پاکستانی اور سکھ کمیونٹی نے شرکت کی۔مظاہرین ہاتھوں میں بھارت کے خلاف نفرت آمیز نعروں والے بینر اٹھائے ہوئے تھے۔ لوگوں نے انڈیا دہشتگرد کے نعرے بھی لگائے، مظاہرین نےبھارتی آرمی، بھارتی وزیراعظم مودی کے خلاف بھی شدید نعرے بازی کی تھی۔ واضح رہے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی فرانس میں جی سیون سمٹ میں شرکت کیلئے دورے پر گئے تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں