رانا ثناء اللہ ، حمزہ شہباز، مریم نواز اور شہباز شریف کے کیسز کی سماعت کرنے والے جج(judge) کا تبادلہ کر دیا گیا

وفاقی حکومت نے تینوں ججز کی خدمات واپس کرنے کا نوٹفکیشن جاری کر دیا

judge

اسلام آباد وفاقی حکومت نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف، حمزہ شہباز، مریم نواز اور لیگی رہنماء رانا ثناء اللہ کیسز کی سماعت کرنے والے ججز کی خدمات لاہور ہائیکورٹ کو واپس کر دیں۔ وفاقی حکومت نے تینوں ججز(judge) کی خدمات واپس کرنے کا نوٹفکیشن جاری کر دیا ہے۔ فاقی حکومت نے شہباز شریف، حمزہ شہباز اور مریم نواز کے مقدمات کی سماعت کرنے والے احتساب عدالت کے جج کی خدمات لاہور ہائیکورٹ کو واپس کر دی ہیں۔ مریم نواز شریف اور دیگر کے خلاف جج نعیم ارشد سماعت کر رہے تھے۔ احتساب عدالت کے جج مسعود ارشد باگڑی کی خدمات بھی عدالت عالیہ لاہور کو واپس کر دی گئیں ۔

اب جنگ ہوئی تو آخری ہوگی۔ وزیر ریلوے شیخ رشید(sheikh rasheed)

جج (judge)مسعود ارشد باگڑی رانا ثناء اللہ کیس کی سماعت کر رہے تھے۔ لاہورکی احتساب عدالت کے جج مشتاق الٰہی کی خدمات بھی واپس کر دی گئی ہیں۔ جج مشتاق الٰہی کی عدالت میں بھی سیکڑوں نیب کیسز زیر سماعت ہیں، تینوں ججز(judge) کی خدمات واپس کرنے کا نوٹفکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔ وفاقی حکومت نے لاہور ہائیکورٹ سے انسداد منشیات اور احتساب عدالتوں میں ڈیپوٹیشن پر تعیناتی کے لیے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججز کے نام مانگ لیے ہیں۔وفاقی حکومت کی جانب سے تینوں ججوں کی خدمات واپس لینے کے نوٹفکیشن کے بعد تاحال لاہور ہائیکورٹ سے نوٹفکیشن جاری نہیں ہوسکا۔ اس معاملے پر صحافیوں نے بھی تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ یہ ظلم کی حد ہے۔ صحافی انصار عباسی نے کہا کہ ظلم کی بھی کوئی حد ہوتی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں