پاکستان سے مذاکرات سے کبھی انکار نہیں کیا۔بھارتی وزیر خارجہ(foreign minister)

foreign minister

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ بھارت کے وزیر خارجہ(foreign minister) کا کہنا ہے کہ پاکستان کے ساتھ متنازع معاملات پر دو طرفہ مذاکرات کے لیے تیار ہیں۔جب کہ پاکستان کے وزیر خارجہ (foreign minister)شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ پاکستان کوبھارت کے ساتھ مذاکرات پر کوئی اعتراض نہیں ہے۔پاکستان سے مذاکرات سے کبھی انکار نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ بھارت کرفیو ہٹائے اور کشمیریوں کو رہا کرے۔مجھے کشمیری قیادت سے ملنے دیا جائے تو مذاکرات ہو سکتے ہیں۔خیال رہے کہ گذشتہ روز پورے پاکستان میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے پاکستانی عوام باہر نکلی۔۔وزیراعظم عمران خان وزیراعظم سیکٹریٹ میں موجود تھے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پیغام دیتےہیں جب تک کشمیریوں کوآزادی نہیں ملےہم ان کیساتھ رہیں گے، کشمیریوں کی آزادی کےلیےآخری دم تک ان کیساتھ کھڑے رہیں گے، یہ کیسی حکومت ہے، جو کشمیریوں پر ایسے مظالم ڈھا رہی ہے۔

وزیر خارجہ(Foreign minister) شاہ محمود قریشی نے سلامتی کونسل کے صدر کو ایک اور خط لکھ دی

ان کا کہنا تھا کہ پوری دنیاکوکشمیریوں کیساتھ کھڑےہوناچاہیےتھا، افسوس ہےجب مسلمانوں پر ظلم ہوتا ہے تواقوام متحدہ خاموش رہتاہے، جب تک کشمیر آزاد نہیں ہوتا ہر فورم پر کشمیریوں کی جنگ لڑوں گا، کہا تھا کشمیریوں کا سفیر بنوں گا اور کشمیریوں کے لیے آواز اٹھاتا رہوں گا۔

وزیراعظم نے کہا آرایس ایس کانظریہ بھارت میں عیسائی اور دیگر مذاہب کیلئے بھی خطرہ ہے، آر ایس ایس بھارت میں سیکولر طبقے کیلئے بھی خطرناک ہے، آر ایس ایس کے ممبر نے ہی گاندھی کو قتل کیا تھا، آرایس ایس بھارت کے آئین اور سپریم کورٹ کونہیں مانتا، صرف ہندتوووا اور ہندو راج کو مانتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں