بھارت کا چاند(moon) پر اترنے کا چندریان 2 مشن ناکام,جس پر بھارتی وزیراعظم نریندر مودی اوراسرو چیف جذباتی ہو گئے

moon

بھارت کے خلائی ادارے نے کہا ہے کہ اس کا چاند(moon) کی جانب جانے والے اپنے مشن، چندریان ٹو سے رابطہ ٹوٹ گیا ہے۔ یہ رابطہ اس وقت منقطع ہوا جب چندریان ٹو کچھ ہی دیر کے بعد چاند کی سطح پر اترنے والا تھا۔ نریندرا مودی شدید مایوس ہوکر خلائی ادارے کے ہیڈ کوارٹر سے چلے گئے۔

خلائی تحقیق کے مرکز کے چیئر میں سروین نے کہا ہے کہ رابطہ منقطع ہونے سے اس قومی منصوبے کو دھچکا لگا ہے جو چاند(moon) کے جنوبی قطبی علاقے میں اترنے کے لیے بنایا گیا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ خلائی ادارے کے سائنس دان اس سلسلے میں تحقیقات کر رہے ہیں۔

مولانا فضل الرحمان(fazal-ur-rehman) نے مطالبہ کیا ہے کہ بلوچستان حکومت انہیں سونپی جائے،ملین مارچ منسوخ کردوگا

انڈین خلائی ریسرچ آرگنائزیشن (اسرو) کے صدر کے سیون نے مشن کے بارے میں کہا ہے کہ ’چاند گاڑی وکرم منصوبے کے مطابق اتر رہی تھی اور چاند(moon) کی سطح سے 2.1 کلومیٹر دور سب کچھ معمول پر تھا۔ لیکن اس کے بعد اس کا رابطہ ختم ہو گیا۔ اعداد و شمار کا جائزہ لیا جائے گا۔‘

انڈین وقت کے مطابق اس سیٹلائیٹ کی رات 1:30 بجے سے 2.30 بجے کے درمیان چاند کے جنوبی قطب پر لینڈنگ متوقع تھی۔ انڈیا کا چندریان ٹو خلا میں چھوڑے جانے کے ایک ماہ بعد 20 اگست کو چاند(moon) کے مدار میں داخل ہوا تھا۔

چاند پر لینڈنگ کا منظر دیکھنے کے لیے بھارتی وزیراعظم مودی بھی اسپیس ایجنسی کے ہیڈ کوارٹر میں تھے جب انہیں بتایا گیا کہ سگنل منقطع ہو گیا ہے تو مودی مایوس ہوکر وہاں سے چلے گئے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق بھارت کا چاند مشن بظاہر ناکام ہو گیا ہے۔ وہ چاند(moon) کے قطب جنوبی پر لینڈنگ کرنے والا پہلا ملک بننا چاہتا تھا۔ اس سے قبل 2008 میں بھی بھارت کا چاند مشن ناکام ہو گیا تھا جب کہ امریکا، روس اور چین چاند کی سطح پر کامیاب لینڈنگ کر چکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں