کسان(farmer) نے کدو میں سوراخ کر کے اسے کشتی بنا لی

farmer

ٹینیسی سے تعلق رکھنے والے کسان(farmer) جسٹن اونبی نے ایک عظیم الجثہ کدو
اگایا ہے۔جسٹن پچھلے چار سالوں سے اس بڑے کدو کو اگانے کا خواب
دیکھ رہے تھے۔ جیسے دوسرے خوابوں کی تعبیر پانے کے لیے کافی
محنت کرنا پڑتی ہے، ویسے ہی بڑے سائز کا کدو اگانے کے لیے بھی
بہت محنت کرنا پڑتی ہے۔آخر کار اُن کے ہاتھ پچھلے سال ٹینیسی کے
سب سے بڑے کدو کا اعزاز پانے والے 1700 پاؤنڈ وزنی کدو کے بیج لگ گئے۔

انہوں نے اس سال مئی میں اس کدو کو اگایا اور اس کی خوب دیکھ بھال کی۔
انہوں نے کدو کی ایسے دیکھ بھال کی، جیسے کوئی باپ اپنے بچوں کی
کرتا ہے۔انہوں نے اسے ایسی جگہ اگایا تھا جہاں پانی آسانی سے بہتا ہو
تاکہ گرمیوں میں اسے ٹھنڈا رکھا جا سکے۔انہوں نے کیڑے مکوڑوں سے
اس کی حفاظت کی۔

امریکی جج صدر ڈونلڈ ٹرمپ(donald trump) کے مواخذے کے لیے تفتیش کو قانونی قرار دے دی

اسے وقت پر پانی دیا۔ کسان(farmer)جسٹن کی بیوی کرسٹن نے بتایا کہ پہلے اُن کے شوہر
بہت سے کدو اگاتے تھے۔

اس سال انہوں نے ایک ہی کدو اگایا اور ساری توجہ اسی کی طرف مرکوز کر دی۔
کسان(farmer)جسٹن کی محنت کا ثمر انہیں 910 پاؤنڈ وزنی کدو کی صورت میں ملا۔آدھے
ٹن وزن کا کدو جسٹن کے خاندان نے پہلی دفعہ اگایا ہے۔اس سے پہلے
وہ 220 پاؤنڈ وزنی کدو اگا چکے ہیں۔
جسٹن نے اتنا بڑا کدو اگانے کی خوشی کو انوکھے طریقے سے منایا۔ انہوں
نے کدو میں سوراخ کر کے اسے کشتی بنا لیا۔ انہوں نے اپنے بچوں کے
ساتھ گھر کے قریب ایک تالاب میں اس کدو کشتی کی آزمائش بھی کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں