سگی بھتیجی کو زیادتی اور قتل(kill) کرنے والے نوجوان کا اعترافِ جُرم

kill

گزشتہ روز راولپنڈی ایئر پورٹ کے قریبی علاقے میں انسانیت کو خُون کے
آنسو رُلا دینے والا ایک دل سو زواقعہ پیش آیا جب سگے چچا نے اپنی
ننھی مُنی بھتیجی کو ہی اپنی جنسی درندگی کا نشانہ بنا ڈالا۔ 7 سالہ معصوم
سِدرہ کے وہم و گمان میں بھی نہ تھا کہ اُس کی عزت کا رکھوالا چچا ہی
اُس کو یوں بے رحمی سے زیادتی کا نشانہ بنا ڈالے گا۔
سفاک ملزم نے یہیں پر بس نہ کی بلکہ اپنی ہوس پُوری کرنے کے بعد
اُسے قتل(kill) بھی کر ڈالا اور پھر گھر سے باہر نکل گیا۔ جب سدرہ کے
والدین نے اپنی بچی کو خون میں لت پت دیکھا تو اُن پر قیامت سے
پہلے ہی قیامت ٹُوٹ پڑی۔ پولیس نے تفتیش کا آغاز کیا تو یہ جان کر
سب کے پیروں تلے سے زمین سرک گئی کہ یہ واردات انجام دینے
والا کوئی غیر نہیں بلکہ بدنصیب بچی کے والد کا اپنا سگا بھائی تھا۔

شیخوپورہ(Sheikhupura)، بیٹی کے ساتھ ڈیوٹی سرانجام دینے کی تصویر وائرل

شک پڑنے پر جب چچا ولی اللہ کو گرفتار کر کے اس سے تفتیش کی
گئی تو اس نے اپنی 7سالہ بھتیجی کو زیادتی کے بعد قتل(kill) کرنے کی
دوہری بھیانک وارداتوں کا اعتراف کر لیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق
سِدرہ کے قاتل ملزم چچا ولی اللہ کو آج سول جج کی عدالت میں پیش
کیا گیا تو اس نے عدالت میں بھی اپنے گھناؤنے جُرم کا اعتراف کر لیا۔
جس پر سول جج نے ملزم کو اپنے اقبال جُرم کے حوالے سے دوبارہ
سوچنے کا کہا۔
سول جج نے ملزم سے کہا کہ جس جُرم کا آپ اعتراف کر رہے ہیں،
کیا آپ کو پتا ہے اس جُرم میں بہت سنگین سزا ہو سکتی ہے، جس پر
ملزم ولی اللہ کا کہنا تھا کہ جی مجھے بالکل پتا ہے، مگر میں اپنے
کیے پر اپنے بھائی اور بھابی سے معافی مانگتا ہوں اور عدالت سے
بھی معافی کا طلب گار ہوں۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز پیش آنے والے
زیادتی کے اس واقعے کے بعد پولیس نے بچی کی لاش پوسٹ مارٹم
کے لیے ڈی ایچ کیو اسپتال منتقل کردی تھی۔
اے ایس پی سول لائن نے کہا ہے کہ پوسٹ مارٹم کے بعد بچی سے
زیادتی کی تصدیق ہوگئی ہے۔سدرہ نامی بچی کے والد نور اللہ نے پولیس
کو بتایا ہے کہ جب وہ کام سے واپس گھر آیا تو گھر کا دروازہ کھلا ہوا
تھا ،اس کی بیوی سو رہی تھی اور اس نے اپنی بچی کو مردہ حالت میں
کمرے کے باہر پڑا ہوا دیکھا۔گھر میں مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بننے
کے بعد قتل(kill) ہونے والی معصوم بچی کے حوالے سے پولیس نے بتایا ہے
کہ بچی کی ناک اور منہ سے خون نکل رہا تھا اور گھٹنے پر چوٹ کا
نشان بھی تھا۔پولیس نے سات سال کی معصوم بچی کے ساتھ زیادتی اور
قتل کے الزام میں بچی کے چچا کو حراست میں لے لیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں